پرائمری سکولز انفراسٹر کچر سیٹزن رپورٹ کا رڈ اجراء کے تحت رپورٹ جاری

پرائمری سکولز انفراسٹر کچر سیٹزن رپورٹ کا رڈ اجراء کے تحت رپورٹ جاری

  

چارسدہ (بیورو رپورٹ) ضلع چارسدہ میں پرائمری سکولوں کے انفراسٹرکچر کے حوالے سے سیٹزن رپورٹ کارڈ اجراء کے تحت رپورٹ جاری ۔ ضلع چارسدہ میں والدین کی اکثریت پرائمری سکولوں کی انفراسٹرکچر سے غیر مطمئن ۔ 55فی صد والدین سکولوں میں واش روم کے خراب صورتحال جبکہ 46 فی صد والدین پرائمری سکولوں میں غیر نصابی سرگرمیوں سے مطمئن نہیں ۔ تفصیلات کے مطابق مقامی تنظیم سائبان ڈیویلپمنٹ آگنائزیشن اورسی پی ڈی آئی اسلام آباد کی جانب سے یورپی یونین فریڈرک ٹو مین فاؤنڈیشن فار فریڈم کے تعاون سے سیٹزن رپورٹ کارڈ اجراء کے تحت ضلع چارسدہ کے پرائمری سکولوں کے حوالے سے جاری کر دہ رپورٹ کے مطابق 55فی صد والدین سکولوں میں واش روم کے خراب صورتحال جبکہ 46 فی صد والدین پرائمری سکولوں میں غیر نصابی سرگرمیوں سے مطمئن نہیں۔ رپورٹ کے مطابق ہ 20فی صد والدین نے سکولوں کی عمارت کی خستہ حالی سے پر شدید نالاں ہیں جبکہ 19 فی صد و الدین سکولوں کے روزمرہ کی د یکھ بال نہ ہونے شکایت درج کی ۔اس رپورٹ کا اجراء ڈسٹرکٹ انٹرسٹ گروپ ،سائبان ڈیولپمنٹ آگنائزیشن کی مدد سے کیا گیا۔سی آر سی تحقیق کا ایک طریقہ ہے جس کے ذریعے عوامی خدمات کے حوالے سے شہریوں کی رائے محکموں کی جانب سے فراہم کردہ خدمات ،سہولیات اور ان کے اطمینان کا اندازہ لگایا جاتا ہے۔رپورٹ میں مزید واضح کیا گیا ہے 65فی صد والدین سکول انتظامیہ اور والدین کے مابین رابطہ کار کا کے فقدان اور سکولوں میں غیر نصابی سر گرمیاں نہ ہونے پر بھی نالاں ہیں ۔رپورٹ کے مطابق گزشتہ ایک سال کے دوران اساتذہ اور والدین کے درمیان کوئی میٹنگ یا بچوں کی غیر نصابی سرگرمیوں کے حوالے سے کوئی رابطہ نہیں ہوا۔ رپورٹ میں 26 فی صد بچوں نے گزشتہ ایک سال میں اپنے اساتذہ کے غیر حاضری کی شکایت کی ۔۔اس پراجیکٹ کا مقصد ''پاکستان میں ترقی کیلئے جمہوری مقامی حکومتیں'' کے تحت کیا گیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -