کراچی،اسداللہ بھٹوکی برطرف پولیس اہلکاروں کے دھرنے میں شرکت

کراچی،اسداللہ بھٹوکی برطرف پولیس اہلکاروں کے دھرنے میں شرکت

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان و سابق ایم این اے اسد اللہ بھٹو نے مطالبہ کیا ہے کہ سندھ حکومت محکمہ پولیس سے بر طرف اہلکاروں کو انسانی ہمدردی کے ناطے بحال کرکے تین ہزار خاندانوں کو فاقہ کشی سے بچایا جائے۔ سیاسی بنیادوں پر نئی بھرتیاں کرنے کے بجائے ایس آر پی کے تربیت یافتہ اہلکاروں کو بحال کیا جائے کیونکہ انہوں نے تین چار سال سے ڈیوٹی بھی دی ہے۔ 15 دنوں سے پریس کلب پر سراپا احتجاج اہلکاروں کی طرف حکومتی نمائندوں کا نہ آنا افسوس ناک اور بے حسی کی انتہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج پریس کلب پر بر طرف سندھ ریزرو پولیس اہلکاروں کے احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اسد اللہ بھٹو نے مزید کہا کہ حکومت کی غلط، مفاد پرستانہ اور اقربا پروری کی پالیسیوں سے سندھ کا ہر شعبہ زبوں حالی کا شکار ہے، جبکہ اساتذہ سے لیکر پولیس اہلکار اپنے حقوق کیلئے سراپا احتجاج ہیں مگر حکمرانوں کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگتی۔ انہوں نے زور دیا کہ حکومت سندھ ریزرو پولیس اہلکاروں کو بحال کر کے 3000 خاندانوں کو فاقہ کشی سے بچائے جبکہ دوران ملازمت شہید اور فوت ہونے والے پولیس اہلکاروں کے خاندانوں کی مالی مدد کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ہر مظلوم کے ساتھ ہے۔ برطرف پولیس اہلکاروں کی عدل و انصاف کے مطابق بحالی کیلئے ہر فورم پر آواز اٹھائے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -راولپنڈی صفحہ آخر -