اگر آپ نے کبھی بھی انٹرنیٹ پر کوئی فحش فلم دیکھی ہے تو یہ خبر ضرور پڑھ لیں، بہت بڑے نقصان سے بچ سکتے ہیں کیونکہ۔۔۔

اگر آپ نے کبھی بھی انٹرنیٹ پر کوئی فحش فلم دیکھی ہے تو یہ خبر ضرور پڑھ لیں، ...
اگر آپ نے کبھی بھی انٹرنیٹ پر کوئی فحش فلم دیکھی ہے تو یہ خبر ضرور پڑھ لیں، بہت بڑے نقصان سے بچ سکتے ہیں کیونکہ۔۔۔

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) اگر آپ نے زندگی میں کبھی ایک بار بھی انٹرنیٹ پر کوئی فحش فلم دیکھی ہے تو محتاط ہو جائیں، آپ ایک بڑے دھوکے کا شکار ہو کر بھاری رقم سے ہاتھ دھو سکتے ہیں۔ دی مرر کی رپورٹ کے مطابق آج شاید ہی کوئی مرد ایسا ہو جس نے انٹرنیٹ پر فحش فلم نہ دیکھی ہو، اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ کچھ عرصہ قبل کینیڈا کی یونیورسٹی آف مونٹریال نے کسی ایک ایسے مرد کی تلاش شروع کی جس نے فحش فلم نہ دیکھ رکھی ہو لیکن کئی ماہ کی جدوجہد کے بعد اسے ناکامی کا منہ دیکھنا پڑااور اسے کوئی ایک ایسا مرد بھی نہ مل سکا۔چنانچہ نوسربازوں کے ایک گروہ نے اسی چیز کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے لوگوں کو جعلی ای میلز کرکے لوٹنا شروع کر رکھا ہے۔

رپورٹ کے مطابق یہ گروہ لوگوں کو ای میلز کرتا ہے جس میں انہیں بتاتا ہے کہ جب وہ انٹرنیٹ پر فحش فلم دیکھ رہے تھے تو انہوں نے ایک وائرس اس فحش ویب سائٹ کے ذریعے ان کے کمپیوٹر میں داخل کر دیا تھا اور جیسے ہی انہوں نے ویڈیو کو چلانے کے لیے اس پر ’کلک‘ کی وہ وائرس بھی متحرک ہو گیا اور نہ صرف ان کی فحش فلم دیکھنے کی ویڈیو ریکارڈ کر لی بلکہ کمپیوٹر میں موجود تمام ذاتی ڈیٹا بھی حاصل کر لیا۔ اب تمہاری وہ ویڈیو اور ڈیٹا ہمارے پاس موجود ہے۔ ہمیں رقم دو ورنہ ہم یہ ویڈیو تمہارے دوستوں اور عزیزواقارب کو بھیج دیں گے اور تم کسی کو منہ دکھانے لائق نہیں رہو گے۔رپورٹ کے مطابق یہ گروہ عموماً 295ڈالر (تقریباً 32ہزار روپے) کی رقم طلب کرتے ہیں۔ اب چونکہ ہر کسی نے فحش فلم دیکھ رکھی ہوتی ہے، تو وہ خوفزدہ ہو جاتے ہیں اور عزت بچانے کے لیے اس گروہ کو رقم دے دیتے ہیں۔سام نامی آئی ٹی کے ماہر کا کہنا ہے کہ ”یہ ای میل محض ایک جھوٹ ہوتا ہے، ان کے پاس کوئی ویڈیو نہیں ہوتی اور وہ نفسیاتی طور پر لوگوں کو خوفزدہ کرکے اپنا مقصد نکالنے ہیں، جو ڈر جائے وہ انہیں رقم دے دیتا ہے اور جو اس ای میل کو نظرانداز کر دے وہ محفوظ رہتا ہے۔“ چنانچہ آپ میں سے کسی کو بھی ایسی ای میل موصول ہو تو اس پر قطعاً پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، اسے ڈیلیٹ کر دیں اور اطمینان رکھیں، کوئی ویڈیو آپ کے دوستوں اور عزیزوں کو نہیں ملے گی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -برطانیہ -