ہندوستان میں بارویں کلاس کی طالبہ کا گینگ ریپ ،دہلی کمیشن فاروومن کی سربراہ نے ایسی بات کر دی کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سانس لینا بھی بھول جائیں گے

ہندوستان میں بارویں کلاس کی طالبہ کا گینگ ریپ ،دہلی کمیشن فاروومن کی سربراہ ...
ہندوستان میں بارویں کلاس کی طالبہ کا گینگ ریپ ،دہلی کمیشن فاروومن کی سربراہ نے ایسی بات کر دی کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سانس لینا بھی بھول جائیں گے

  

نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن)بھارت میں خواتین کے ساتھ ہونے والے جنسی زیادتی کے بڑھتے ہوئے واقعات نے سول سوسائٹی کو بے حال کر دیا ہے تاہم مودی سرکار اس حوالے سے آنکھیں بند کئے ہوئے ہے ،اب مغربی بنگال میں بھی اجتماعی ریپ کا ایک انتہائی شرمناک واقعہ پیش آیا ہے جس میں اپنے کلاس فیلو کی سالگرہ تقریب میں شرکت کے لئے آنے والی بارویں کلاس کی طالبہ کو 4لڑکوں نے گینگ ریپ کا نشانہ بنا نے کے بعد قتل کرنے کی کوشش ،متاثرہ طالبہ انتہائی تشویش ناک حالت میں ہسپتال منتقل ،پولیس نے مقدمہ درج کر کے تین ملزموں کو گرفتار کر لیا مرکزی ملزم فرار ہونے میں کامیاب ،دوسری طرف دہلی وومن کمیشن کی چیئرپرسن سواتی مالیوال نے بھارت میں رہپ کے بڑھتے ہوئے واقعات کی ایسی تفصیلات بیان کر دیں ہیں کہ مودی حکومت کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہ رہے گی ۔

بھارتی نجی ٹی وی چینل ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ کے مطابق مغربی بنگال میں بارویں کلاس کی طالبہ اپنے کلاس فیلو کی سالگرہ میں شریک ہونے کے لئے اس کے گھر پہنچی تو وہاں موجود کلاس فیلو اور اس کے دیگر تین دوستوں نے شراب میں خواب آوور گولیاں ملا کر لڑکی کو زبردستی پلا دی اور بعد ازاں اسے اجتماعی گینگ ریپ کا نشانہ بنایا اور پھر اسے جان سے مارنے کی کوشش کی تاہم خوش قسمتی سے اس کی جان تو بچ گئی تاہم خون زیادہ بہہ جانے کی وجہ سے اسے انتہائی تشویش ناک حالت میں مقامی ہسپتال میں منتقل کر دیا گیا ہے ۔متاثرہ لڑکی کے اہل خانہ کی درخواست پر پولیس نے مقدمہ درج کر کے تین ملزموں کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ چوتھا اور مرکزی ملزم فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا ہے۔

دوسری طرف ہندوستان میں ریپ کے بڑھتے ہوئے واقعات کے حوالے سے دہلی کمیشن فار وومن کی سربراہ سواتی مالیوال نے ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ کے ایک پروگرام میں بھارتی حکومت کا چہرہ ننگا کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے پولیس میں درج ہونے والی شکایات کا جائزہ لیاتو انکشاف ہوا کہ 2012سے لیکر 2014تک صرف دہلی میں 31ہزار 4سو46لڑکیوں کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا جبکہ پولیس میں درج ہونے والی ان ایف آئی آرز کے کسی ایک ملزم کو بھی سزا نہیں ملی ،میں تمام متاثرہ بچیوں سے مل کر آتی ہوں ،ان کی آنکھیں مجھ سے سوال پوچھتی ہیں لیکن میں اعتراف کرتی ہوں کہ ہمارے پاس ان متاثرہ بچیوں کے سوالوں کا کوئی جواب نہیں ہے ۔سواتی مالیوال کا کہنا تھا کہ مجھے لگتا ہے کہ ہندوستان میں کسی کو ڈر نہیں لگتا ،لوگوں کو لگتا ہے کہ کسی بھی بچی کسی بھی لڑکی اورکسی بھی عورت کو ساتھ جب مرضی اور جہاں چاہیں بلاتکار کر دیں ان کا سسٹم کچھ بگاڑ نہیں سکتا ،دہلی میں گیارہ مہینے کی بچی کا بلاتکار ہوا ،پھر ایک سال کی بچی سے جنسی زیادتی ہوئی ،پھر دوسالہ معصوم بچی پھر تین سالہ معصوم بچی کو جنسی درندوں نے زیادتی کا نشانہ بنایا، ہر روز ریپ کے کئی واقعات نے سسٹم کو فیل کر دیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہماری ناکامی کا تو یہ عالم ہے کہ پچھلے دس سال سے دہلی پولیس کے لئے ایک سافٹ وئیر نہیں بن سکا ،فرانزک کی کمی ہے ،ہم نے فرانزک کو نوٹس بھیجا تو پتا چلا کہ سسٹم اتنا ناکارہ ہے کہ 15سو سیمپل ہی ایکسپائر ہو چکے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ سچائی یہی ہے کہ بھارت میں پہلے ایک لڑکی کے ساتھ کچھ لوگ ریپ کرتے ہیں اور پھر اس کے بعد پورا سسٹم اس متاثرہ لڑکی کا ریپ کرتا ہے ۔سواتی مالیوال کا کہنا تھا کہ ہریانہ میں ایک گھنٹے میں چار لڑکیوں کو ریپ کا نشانہ بنایا جا رہا ہے جب کہ ہریانہ تو اب ریپ سٹی کہلا نا شروع ہو گیا ہے کیونکہ جن لوگوں کو کچھ کرنا ہے وہ کام ہی نہیں کر رہے ۔

مزید :

بین الاقوامی -