بورے والا، تھانہ صدر کی حدود میں مبینہ پولیس مقابلہ، 4ڈاکو ہلاک، ورثاء کا مظاہرہ

    بورے والا، تھانہ صدر کی حدود میں مبینہ پولیس مقابلہ، 4ڈاکو ہلاک، ورثاء ...

  



بورے والا(نمائندہ خصوصی)تھانہ صدر کی حدود میں مبینہ پولیس مقابلہ،چار ڈاکو ہلاک،ڈاکو موٹر سائیکل چھین کر فرار ہو رہے تھے،پولیس ذرائع،پولیس مقابلہ میں ہلاک ہونے والوں کے ورثاء اور اہل دیہہ کا اڈا ماچھیوال پر روڈ بلاک کر کے پر تشدد احتجاجی مظاہرہ،مذاکرات کیلئے آنے والے ڈی ایس پی سمیت دیگر پولیس اہلکاروں پر ڈنڈوں اور لاتوں سے بہیمانہ تشدد،پولیس اہلکاروں نے دوڑیں لگا کر جان بچائی،مشتعل مظاہرین کا پولیس کی گاڑیوں پر پتھراؤ اور ڈنڈوں سے حملہ،اڈا ماچھیوال میدان جنگ کا منظر پیش کرتا رہا،مظاہرین نے مقابلہ جعلی قرار دے دیا،مارے جانے والے بے گناہ تھے،مظاہرین،پولیس ذرائع کے مطابق بورے والا کے نواحی گاؤں 519 (ای بی) کے قریب تھانہ صدر کی حدود میں جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب چار ڈاکو ایک راہگیر سے موٹر سائیکل اور نقدی چھین کر فرار ہو رہے تھے جسکی اطلاع پولیس کو 15 پر ملی جس پر تھانہ صدر پولیس اور ایلیٹ فورس کے جوانوں نے انکا تعاقب کر کے گھیرا ڈال لیا پولیس کو دیکھ کر ڈاکوؤں نے پولیس پارٹی پر فائرنگ کر دی جسکے جواب میں پولیس کے جوانوں نے پوزیشنیں سنبھال کر جوابی فائرنگ شروع کر دی ایک گھنٹہ تک فائرنگ کے تبادلہ میں چاروں ڈاکو پولیس کی گولیوں کا نشانہ بن کر ہلاک ہو گئے ہلاک ہونے والے ڈاکوؤں کے متعلق پولیس ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ انکا تعلق بین الاضلاعی گروہ سے تھا اور یہ قتل،ڈکیتی،راہزنی اور دیگر سنگین وارداتوں میں ملوث تھے جنکی شناخت محمد جمیل،شکیل احمد،محمد اسلام سکنہ 555 (ای بی) ماچھیوال اور سرفراز مسیح سکنہ شیخوپورہ کے نام سے ہوئی ہے اس پولیس مقابلہ میں ایک ہی گاؤں کے تین ملزمان کی ہلاکت پر انکے ورثاء اور اہل دیہہ نے اس مقابلہ کو جعلی قرار دیتے ہوئے اسکے خلاف اڈا ماچھیوال پر ٹائر جلا کر روڈ بلاک کرنے کے بعد پولیس کے خلاف نعرے بازی شروع کر دی مظاہرین نے وہاں سے گزرنے والی ایک ایمبولینس کو بھی روکے رکھا صورتحال کو دیکھتے ہوئے ڈی ایس پی صدر وہاڑی خالد جاوید اور دیگر پولیس اہلکار مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے مذاکرات کرنے پہنچے تو مشتعل مظاہرین نے ان پر ڈنڈوں اور لاتوں سے بہیمانہ تشدد شروع کر دیا تشدد کا نشانہ بننے والے ڈی ایس پی اور دیگر اہلکاروں نے وہاں سے بھاگ کر جانیں بچائیں جبکہ مظاہرین نے پولیس کی گاڑیوں کو پتھراؤ اور ڈنڈوں سے بھی نشانہ بنایا اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے پولیس کی بھاری نفری طلب کر لی اس موقع پر مظاہرین نے الزام عائد کیا کہ ہلاک ہونے والے نوجوان بے گناہ تھے جنہیں پولیس نے آٹھ روز قبل گرفتار کیا تھا اور رات گئے جعلی پولیس مقابلے میں انہیں مار ڈالا ہے ہمیں انصاف دیا جائے۔

4 ڈاکو ہلاک

اور اس مقابلے کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کی جائیں آخری اطلاع آنے تک مظاہرہ جاری تھا۔

مزید : علاقائی