چین سے آنیوالے مسافروں کی نگرانی جاری، پاکستان میں کرونا کا کوئی مریض نہیں: ظفر مرزا

  چین سے آنیوالے مسافروں کی نگرانی جاری، پاکستان میں کرونا کا کوئی مریض نہیں: ...

  



اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) کرونا وائرس ایمر جنسی کور گروپ کا جائزہ اجلاس وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کی زیرصدارت ہوا،اجلاس میں ایگزیکٹو ڈائریکٹر این آئی ایچ میجرجنرل عامراکرام اور پاک فوج کے نمائندے بھی شریک ہوئے اجلاس میں کروناوائرس سے نمٹنے کیلئے موجودہ اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا پاکستان میں کرونا وائرس کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا حکومت پاکستان نے کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے موثر اقدامات کو یقینی بنایا ہے۔ انہوں نے کہا نیشنل ایکشن پلان کے مطابق اسلام آباد کے حج کمپیلکس کو حفظ ماتقدم کے طور پر کورنٹاین کیا ہے جبکہ پاکستان کے تمام انٹری پوائنٹس پر سکریننگ کی جا رہی ہے، چین سے آنے والے مسافروں کا ڈیٹا بھی لیا جا رہا ہے اور اس ڈیٹا کے ذریعے ان کی نگرانی بھی کی جا رہی ہے۔

ظفرمرزا

بیجنگ،ووہان (شِنہوا) چین میں نوول کرونا وائرس کے باعث مزید 121افرادہلاک اور 5090نئے مریضوں کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد مجموعی ہلاکتیں 1380جبکہ متاثرہ افراد کی تعداد 63ہزار 851 ہوگئی جن میں سے 10ہزار204مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔جمعہ کو چین کے صحت حکام نے اعلان کیا کہ نوول کرونا وائرس کے 5,090 کیسز اور121نئی اموات کی تصدیق ہوئی ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ سنکیانگ کے پیداواری اور تعمیراتی کور سمیت 31 صوبائی سطح کے علاقوں میں جمعرات تک ان کیسز کی تصدیق ہوئی ہے ۔قومی صحت کمیشن کے مطابق مرنے والوں میں 116 کا تعلق ہوبے صوبہ سے ہے جبکہ 2 کا تعلق ہیلونگ جیانگ سے ہے، اس کے ساتھ ساتھ ایک ایک کا تعلق بالترتیب انہوئی، ہینان اور چونگ چنگ سے ہے۔کمیشن کا کہنا ہے کہ جمعرات کو مزید 2,450مشتبہ کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ان میں سے 2,174مریض شدید بیمار ہوگئے ہیں جبکہ 1,081افراد کو صحت یاب ہونے کے بعد ہسپتال سے فارغ کیا گیا ہے۔ چین بھر میں جمعرات کے اختتام تک کورونا وائرس کے مجموعی کیسز کی تعداد 63ہزار 851 تک پہنچ چکی ہے جبکہ اس بیماری کے باعث اب تک 1,380 افرادہلاک ہوئے ہیں۔

کرونا وائرس

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہرمن اللہ نے چین میں پھنسے پاکستانی طلبہ کا نوٹس لیتے ہوئے وزارت صحت اوروزارت خارجہ حکام سے جواب طلب کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق چین میں موجود پاکستان طلبہ نے اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ کو ای میل کے ذریعے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔ ای میل میں استدعا کی گئی کہ حکومت کو ہمیں ووہان سے واپس لانے کا حکم دیا جائے جس کے بعد چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے طلبہ کی ای میل پرنوٹس لے لیا۔ عدالت نے وزارت صحت اوروزارت خارجہ حکام کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب بھی طلب کرلیا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ

مزید : صفحہ اول