امریکہ، افغان طالبان 7روز کیلئے جنگ بندی پر متفق

  امریکہ، افغان طالبان 7روز کیلئے جنگ بندی پر متفق

  



نیو یارک(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ میری انتظامیہ افغان طالبان کیساتھ امن ڈیل کے قریب پہنچ چکی ہے۔ طالبان کے ساتھ اچھے مذاکرات ہو رہے ہیں۔ جس کا نتیجہ آئندہ ایک، دو ہفتوں میں نکل سکتا ہے۔ وقت آ گیا ہے کہ امریکا افغانستان سے اپنی فوج واپس بلا لے۔ان خیالات کا اظہار امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے آئی ہارٹ ریڈیو کے میزبان خیرالدو ریویرا سے ایک انٹرویو کے دوران کیا۔ٹرمپ کا کہنا تھا کہ امریکا افغانستان سے اپنے فوجیوں کو وطن واپس لانے کیلئے طالبان کے ساتھ امن معاہد ے کے لیے کام کر رہا ہے۔ طالبان کے ساتھ اچھے مذکرات ہو رہے ہیں۔ جو امن معاہدہ طے پانے کے لیے بہت اچھا موقع ہے تاہم انہوں نے واضح کیا کہ یہ بات ہم آئندہ ایک، دو ہفتوں میں جان سکیں گے۔طالبان کی جانب سے ایک ہفتے کی عارضی جنگ بندی سے متعلق پوچھے گئے سوال پر ٹرمپ کا مزید کہنا تھا کہ طالبان بھی معاہدہ چاہتے ہیں۔ امریکا کے پاس موجود جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کر کے افغان جنگ جیتی جا سکتی ہے لیکن لاکھوں لوگوں کی ہلاکت کے عوض ایسا کرنے کا ارادہ نہیں رکھتا۔صدر ٹرمپ کا مزید کہنا تھا کہ وہ فلسطین اور اسرائیل کے درمیان معاہدہ طے پا جانے کے لیے بھی پْرامید ہیں۔ جو ایک بڑی کامیابی ہو گی۔امریکا اور طالبان افغانستان میں 7 روز کے لیے جنگ بندی پر متفق ہو گئے۔امریکی وزیر دفاع مارک ایسپر نے افغان طالبان کے ساتھ عارضی جنگ بندی کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ پر تشدد واقعات میں کمی پر اتفاق سے 18 سالہ جنگ کے خاتمے کے لیے امن معاہدے کی امیدیں بڑھ گئی ہیں۔برسلز میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مارک ایسپر کا کہنا تھا کہ ہم سب نے متفقہ طور پر کہا کہ افغانستان کے مسئلے کا اگر کوئی حل ہے تو وہ سیاسی ہے، اس معاملے پر پیشرفت ہوئی ہے اور مزید مثبت خبریں بھی جلد سامنے آئیں گی۔

امریکہ

مزید : صفحہ اول