بور ے والا، مقابلہ میں 4ہلاکتیں، ورثا کا احتجا ج، پولیس پارٹی پر بھی حملہ، متعدد اہلکار زخمی

    بور ے والا، مقابلہ میں 4ہلاکتیں، ورثا کا احتجا ج، پولیس پارٹی پر بھی ...

  



وہاڑی‘ پکھی موڑ (بیورو رپورٹ‘ نمائندہ خصوصی‘ نامہ نگار)پولیس تھانہ صدر بوریوالا کی حدود میں 519ای بی میں مبینہ پولیس مقابلے 4مبینہ ڈاکومارے گئے تفصیلات کے مطابق گزشتہ شب پولیس تھانہ صدر بوریوالا کی حدود519ای بی میں مبینہ پولیس مقابلہ پولیس ذرائع کے مطابق خطرناک ڈاکو 519ای بی سے موٹر سائیکل چھین کر فرار ہورہے تھے 15اطلاع پر پولیس519ای بی پہنچی تو مبینہ ڈاکوؤں سے(بقیہ نمبر42صفحہ7پر)

آمنا سامنا ہوگیا جس پر پولیس پارٹی اور مبینہ ڈاکوؤں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا اور چاروں مبینہ ڈاکو موقع پر ہلاک ہوگئے ریسکیو ٹیموں نے ڈاکوؤں کی نعشیں ڈی ایچ کیو ہسپتال منتقل کردیں جبکہ دوسر جانب مبینہ پولیس مقابلہ میں ہلاک ہونے والے نوجوانوں جمیل،اسلام،چاند و دیگر کے ورثاء نے پولیس مقابلہ جعلی قرار دیتے ہوئے ماچھیوال روڈ بلاک کردیا روڈ بلاک ہونے کے باعث گاڑیوں کی لمبی لائنیں لگ گئیں پولیس ڈی ایس پی صدر سرکل خالد جاوید جوئیہ کی قیادت میں موقع پر پہنچی تو مشتعل مظاہرین نے پولیس ٹیم پر حملہ کردیا مظاہرین کے تشدد سے مبینہ طور پر پولیس اہلکار زخمی ہوگئے مار کے خوف سے پولیس اہلکاروں کی دوڑیں لگ گئیں ورثاء نے الزام لگایا ہے کہ پولیس تھانہ سٹی وہاڑی نے ہمارے بچوں کو 8 روز سے بکری چوری کے الزام میں پکڑ رکھا تھا اور تفتیشی آفیسر بابر سعیدانہیں چھوڑنے کے عوض رشوت بھی طلب کرتا رہا ہمارے پیسے نہ دینے پر پولیس نے کم عمر بے گناہ لڑکوں کو مقابلہ میں مارا ہے اس موقع پر مظاہرین نے شدید ہنگامہ آرائی کرتے ہوئے پنجاب پولیس مردہ باد کے نعرے بھی لگائے مظاہرین کا کہنا ہے کہ انصاف ملنے تک احتجاج جاری رہے گا دوسری جانب روڈ بلاک ہونے کے باعث مسافروں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا تاہم چھ گھنٹے روڈ بلاک رہنے کے بعد سابق ایم پی اے ملک نوشیر علی خان لنگڑیال نے پولیس کی جانب سے مظاہرین اور ورثا ء سے مذاکرات کئے جن میں طے پایا کہ پولیس حراست میں موجود تمام گرفتار لڑکوں کو رہا کریگی اور مبینہ پولیس مقابلہ کی انکوائری کی جائے جس پر مظاہرین نے روڈ کھول کر احتجاج ختم کردیا ہلاک ہونے والوں کے ورثاء کے مطابق اگر پولیس نے اپنے وعدے پر عمل نہ کیا تو دوبارہ روڈ بلاک کرکے احتجاج کیا جائے گا۔

متعدد اہلکار زخمی

مزید : ملتان صفحہ آخر