گینگ مینوں کی بھرتی‘ رشوت وصولی کا الزام سیاسی لڑائی قرار

  گینگ مینوں کی بھرتی‘ رشوت وصولی کا الزام سیاسی لڑائی قرار

  



ملتان (نمائندہ خصوصی)ممبرقومی اسمبلی سردارریاض خان مزاری کی طرف سے عائد کردہ ریلوے ملتان ڈویژن میں گینگ مین کیٹگری میں ہونے والی بھرتی میں رشوت وصولی کے الزام کی انکوائری میں تحقیقاتی کمیٹی کوالزامات کے حوالے سے ثبوت نہ مل سکے ہیں جبکہ ڈویژنل سپرٹننڈنٹ آفس ریلوے ملتان ڈویژن کے کمیٹی روم میں بھرتی میں ہونے والے رشوت(بقیہ نمبر35صفحہ12پر)

وصولی کی انکوائری کرنے والی پرنسپل آفیسران کی ٹیم ڈیرہ غازی خان کشمورسیکشن پربھرتی ہونے والے گینگ مینوں کے بیانات قلم بندکرکے واپس روانہ ہوگئی ہے۔ریلوے ذرائع کے مطابق انکوائری کمیٹی نے رشوت وصولی کے الزام کوسیاسی لڑائی قراردے دیاہے۔بتایاجاتا ہے کہ 17اضلاع پرمشتمل ریلوے ملتان ڈویژن میں گینگ مین کیٹگری پربھرتی میں ڈیرہ غازی خان کشمورسیکشن کی بھرتی میں رشوت وصول کرکے بھرتی کی بابت ممبرقومی اسمبلی سردارریاض خان مزاری نے اسمبلی فورم پرالزم عائد کیاتھاکہ ریلوے ملتان ڈویژن میں ہونے والی بھرتی میں ان کے ڈیرہ غازی خان کشمورسیکشن پربھرتی کے موقع پربھاری رشوت وصول کرکے بھرتی کی گئی ہے۔جس کی وجہ سے میرٹ پرپھرتی ہونے والوں کااستحقاق مجروح ہواہے۔اس سلسلہ میں چیف مکینکل انجینئرریلوے ہیڈکوارٹرعبدالمالک اورچیف پرسانل آفیسرسفیان سرفرازڈوگرپرمشتمل تحقیقاتی ٹیم نے ڈیرہ غازی خان کشمورسیکشن پربھرتی ہونے والے درجنوں گینگ مینوں کے ان کے میٹ،اے ڈبلیوآئیزاوردیگرسٹاف کے بیانات قلم بندکئے۔بتایاجاتاہے کہ چندگینگ مینوں نے اس بات کااعتراف کیاکہ انہوں نے بھرتی کے لئے رقم دی ہے کس کواورکتنی رقم دی ہے یہ معلومات کمیٹی کے سامنے بیان نہ کرسکے۔شمس نامی ایک گینگ مین جس کی بابت بتایاجاتا ہے کہ وہ ایم این اے سردارریاض مزاری کے قریب ہے سے بھی جب پوچھاگیاکہ انہوں نے کس کوبھرتی کے لئے رقم دی تووہ بھی تسلی بخش جواب نہیں دے سکے۔ڈویژنل افسران نے کمیٹی کوبتایاکہ معاملہ صرف ڈویژن کے17اضلاع میں ہونے والی بھرتی میں ایک سیکشن کاہے جہاں کے ایم این اے کی اپنی سیاسی مخالفت ہے کسی اورضلع سے بھرتی میں رشوت وصولی کی شکائت موصول نہیں ہوئی۔انکوائری کمیٹی بیانات قلم بندکرکے لاہورواپس روانہ ہوگئی ہے۔اس سلسلہ میں رابطہ کرنے پرایم این اے سردارریاض خان مزاری نے اسمبلی فورم پردئیے گئے اپنے بیان کہ برعکس کہاکہ بھرتی سے قبل وہ خودڈی ایس ملتان سے ملے تھے انہوں نے بھرتی میرٹ پرکرنے کی یقین دہانی کروائی تھی جس پرانہوں نے اپنے ووٹرزکویقین دہانی کروائی کی بھرتی میرٹ پرہوگی اورکسی کوکوئی رقم دینے کی ضرورت نہیں ہے۔تاہم بعدازاں ریلوے کے افسران نے رقم لے کربھرتی کردی جس کے بعدووٹرآکرکہتے ہیں کہ میں نے انہیں بھرتی نہیں ہونے دیااگرمیں انہیں نہ روکتاتووہ بھی پیسے دے کربھرتی ہوجاتے۔انہوں نے مزیدکہاکہ ان کے پاس مقامی افرادآکرکہتے ہیں کہ بھرتی رشوت کے عوض ہوئی ہے اوررشوت دینے کاکوئی ثبوت نہیں ہوتا۔

الزام

مزید : ملتان صفحہ آخر