ہزار ہ یونیورسٹی کے زیراہتما م کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے حوالے سے تقر یب

ہزار ہ یونیورسٹی کے زیراہتما م کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے حوالے سے تقر یب

  



مانسہرہ(بیورورپورٹ)ہزارہ یونیورسٹی مانسہرہ کے آئی ٹی ڈیپارٹمنٹ میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور ان پر بھارتی مظالم کے خلاف سادہ مگر پروقار تقریب منعقد کی گئی۔تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر سید منظور حسین شاہ نے کہا کہ روس نے 70سالوں تک وسط ایشیائی مسلمان ریاستوں کو محکوم رکھا لیکن چونکہ وہ مذہبی حوالوں سے روس کے ساتھ ہم آہنگ نہیں تھے اس لئے آزاد ہوگئے اور روس تقسیم ہو گیا۔وائس چانسلر نے تاریخ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ تاج برطانیہ جس کی حکومت پوری دنیا پر پھیلی ہوئی تھی وہ بھی سکڑ گیا اور برطانیہ کے زیر نگیں ممالک آزادی سے ہمکنار ہوئے اور ان تاریخی حقائق کو مد نظر رکھتے ہوئے ہمیں یہ بات ذہن نشین رکھنی چاہیے کہ کشمیرکبھی بھی مذہبی، معاشرتی، ثقافتی حوالوں سے بھارت سے ہم آہنگ نہیں رہا اور انشاء اللہ کشمیر بھارت کے تسلط سے آزاد ہوکے رہے گا۔وائس چانسلر نے کہا کہ کشمیریوں نے بھارتی ظلم و استبداد کے باوجود 70سالوں سے اپنا اسلامی تشخص اور روایات کو برقرار رکھا ہوا ہے اور انشاء اللہ جلد ہی کشمیریوں کو بھی آزادی نصیب ہوگی۔ وائس چانسلر نے کہا کہ اللہ کسی نفس پر اس کی برداشت سے زیادہ بوجھ نہیں ڈالتا اور اس حقیقت کو سامنے رکھتے ہوئے یہ بات روز روشن کی طرح عیاں ہے کہ کشمیر پر بھارتی مظالم حد سے بڑھ چکے ہیں اور ان کی قربانیوں کی بدولت آزادی کشمیریوں کا مقدر بن چکی ہے جسے کسی طور پر بھی مزید دبایا نہیں جا سکتا۔وائس چانسلر نے مزید کہا کہ کشمیری صرف اور صرف پاکستان سے الحاق کی خاطر صعوبتیں اٹھائے ہوئے ہیں اور اس لئے ہمارا فرض ہے کہ ہم سفارتی، سیاسی اور اخلاقی محاذوں پر ان کے لئے آواز اٹھاتے رہیں۔وائس چانسلر نے کہا کہ کشمیریوں کے حق میں ہمارے جذبات اور باتیں رائیگاں نہیں جاتیں اور اللہ انہیں کشمیریوں تک پہنچاتا ہے جس سے ان کے حوصلوں کو مزید تقویت ملتی ہے۔ تقریب سے ڈائریکٹر ورکس کرنل(ر) سلیم رضا، ڈاکٹر عارف اقبال عمر ہیڈ آئی ٹی ڈیپارٹمنٹ اور ڈاکٹر فرحانہ کاظمی چیئر پرسن سائیکالوجی ڈیپارٹمنٹ نے بھی خطاب کیا اور اس خطے کی جغرافیائی حیثیت پر روشنی ڈالتے ہوئے تاریخی حقائق کو واضح کیا۔ مقررین نے کہا کہ کشمیر نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا کی دیگر طاقتوں کے لئے بھی تزویراتی اہمیت کا حامل ہے اور اسی لئے یہاں پر بیرونی طاقتیں سازشوں میں مصروف ہیں لیکن ہم نے متحد ہو کر تمام سازشوں کا مقابلہ کرنا ہے تاکہ کشمیریوں کو بھارتی تسلط سے آزادی نصیب ہو۔تقریب میں یونیورسٹی کے مختلف انتظامی افسران اور دیگر ملازمین نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر