تجاوزات کیخلاف کارروائی، پی ٹی آئی سندھ اور وزیر ریلوے آمنے سامنے

تجاوزات کیخلاف کارروائی، پی ٹی آئی سندھ اور وزیر ریلوے آمنے سامنے

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر) کراچی سرکلرریلوے روٹ کے اطراف آباد لوگوں کومتبادل جگہ فراہم کیے بغیرتجاوزات کے خلاف کارروائی پرتحریک انصاف سندھ اوروفاقی وزیرریلوے آمنے سامنے آگئے،سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف فردوس شمیم نقوی نے کہا ہے کہ کراچی سرکلر ریلوے پرعدالتی احکامات کے برعکس غلط بیانی سے کام لیتے ہوئے لوگوں کوبے گھرکیا جارہا ہے،متبادل دیئے بغیرلوگوں کوبے گھرکرنا ظلم ہے،چیف جسٹس کو خود حقائق سے آگاہ کروں گا،ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ متبادل دیے بغیرکوئی بھی دیوارگرائیں گے تو ہم سامنے کھڑیہونگے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے تحریک انصاف کراچی کے صدرخرم شیرزمان، ارکان سندھ اسمبلی کے وفد کے ہمراہ ڈی ایس ریلوینثاراحمد میمن سے سے ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔فردوس شمیم نے وزیرریلویشیخ رشید اورریلوے افسران پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ آراضی پر قبضے میں ملوث محکمہ ریلوے کے سابق اور موجودہ افسران و وزرا کو سزائیں دی جائیں،ڈی ایس ریلوے سے ملنے کا مقصد معلوم کرنا تھا کہ کراچی سرکلرریلوے کی بحالی کے لیے ریلوے کیا کرنے جارہی ہے،متاثرین کومتبادل جگہ کہاں دینی ہے ریلوے حکام کو کچھ پتہ ہی نہیں ہے،ابھی تحریری فیصلہ آیا نہیں انہوں نے گھر توڑنا شروع کردیے،چیف جسٹس سے اپیل ہے کہ ریلوے میں کرپشن کا خاتمہ کرائیں اورمظلوم لوگوں کے معاملے میں انسانیت کے تقاضے پورے کیے جائیں،ہم کراچی کے ساتھ یہ ظلم نہیں ہونے دیں گے ریلوے کے تمام افسران،سیکریٹریزاورافسران جنہوں نیقبضے کرائے سب کو سزادی جائے،ریلوے پلاٹوں پر ان سب منظورنظرکا کاں کو بھی پکڑا جائے،جنہوں نے بلڈنگزبنانیکی اجازت دی سادہ معصوم لوگ ایس بی سی اے پلان دیکھ کر دکان مکان خریدتے ہیں میں خود انجینئرہوں،تین ماہ کے عرصے میں نئی تو کیا پرانی کے سی آربھی نہیں چلائی جاسکتی ہے،عدالت میں غلط بیانی کی جارہی ہے کہ چارسال لگیں گے، جس منصوبے کے لیے ابھی پیسے ہی نہیں رکھے گئینہ روٹ کی منظوری دی گئی ہے اس کے بغیرہی لوگوں کوبے گھرکرنا شروع کردیا گیا ہے،عدالتیں انصاف کریں لوگوں کو بے گھر ہونے سے بچائیں،میں خود چیف جسٹس کے پاس جاؤں گا،جب تک متاثرین کو متبادل نہیں دیا جاتا تب تک کچھ نہیں ہوسکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ 1970کے بعد کراچی کا ماسٹرپلان نہیں بنا،لوگوں کو بے گھرنہ کریں،اگر کسی کا گھر توڑا تو ہمارے ایم پی ایز سامنے کھڑے ہوں گے۔فردوس شمیم نے کہا کہ جائیکا نے کہا72 میٹر ٹریک کے اطراف تجاوزات نہ ہوں ریلوے حکام اس سے تجاوزکررہے ہیں اور200 فٹ کی رینج میں گھرتوڑرہے ہیں،سرکلرریلوے انڈر گراونڈ کیسے بنے گی،منصوبے کے لیے محکمہ ریلوے کو کتنی زمین درکار ہے ڈی ایس کوئی جواب دینے کو تیار نہیں،ڈی ایس ریلوے کو کچھ پتہ ہی نہیں،میں ڈی ایس ریلوے نہیں سیکریٹری ریلوے کی برطرفی کا مطالبہ کروں گا،انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کے آرڈر میں متبادل گھروں کی فراہمی کے حوالے سے لکھا گیا ہے،نیا کوئی تحریری حکم نامہ موجود ہی نہیں محکمہ ریلوے از خود کارروائی کر رہا ہے اورمتبادل دیے بغیرگھرتوڑے جارہے ہیں،کمرشل جائیداد توڑنے پرہمیں کوئی اعتراض نہیں مگر گھر توڑنے نہیں دیں گے۔انہوں نے کہاکہ شیخ رشید کراچی سے تجاوزات ہٹانے سے پہلے اپنے حلقے میں آپریشن کرکے آئیں،ان کے حلقے میں بھی ریلویکی زمینوں پر قبضے ہیں،شیخ رشید ان تمام افسران کے خلاف مقدمہ دائرکریں،ان سب کو کٹہرے میں لائیں،چیف کنٹرولربلڈنگ کروڑوں جیب میں ڈالتا ہے،چوروں سے ہاتھ ملانا پسند نہیں کرتاہے۔

مزید : صفحہ اول