وزیر ستان کے متاثرہ تاجروں کا اسلام آباد میں دھرنے کا اعلان

وزیر ستان کے متاثرہ تاجروں کا اسلام آباد میں دھرنے کا اعلان

  



بنوں (بیورورپورٹ)اپریشن ضرب عضب سے متاثرہ شمالی وزیرستان کی تاجر برادری نے حکومتی اعلان کے مطابق معاوضہ نہ ملنے کی صورت میں ایک مرتبہ پھر اسلام آباد میں دھرنے کا اعلان کردیا جبکہ انجمن تاجران حقیقی ضلع بنوں بھی شمالی وزیرستان کی تاجر برادری کی حمایت میں کھود پڑی شمالی وزیرستان کی تاجر برادی کا ہنگامی اجلاس آل ٹرانسپورٹ یونین بنوں کے صدر ملک مقبول زمان اعوان کے دفتر میں منعقد ہوا اجلاس کے بعد میڈیا کے نمائندوں کو بریفنگ دیتے ہوئے نجمن تاجران شمالی وزیرستان کے صدر دین پیاؤ خان نے کہا کہ اپریشن ضرب عضب میں تاجروں کا اربوں کا نقصان ہوجس کا تخمینہ21ارب روپے لگایا ہے ا اور اسلام آباد دھرنے کے دوران ہم سے وعدہ کیا گیا کہ آپ لوگ دھرنا ختم کردیں آپ کو سات ارب روپے معاوضہ دیا جائیگا جسکے ہزاروں تاجروں نے دھرنا ختم کردیا لیکن آج تک تاجروں کو معاوضہ نہیں دیا گیا جبکہ7ارب76کروڑ روپے ریلیز ہوئے ہیں لیکن ڈپٹی کمشنر وزیرستان اور دیگر ذمہ دار حکام اس میں رکاوٹ ہیں لہذا اگر24گھنٹوں کے دوران یہ سات ار76کروڑ روپے روپے جاری نہ کئے گئے تو 15فروری بروز ہفتہ کابینہ میں اجلاس کے بعد ہم21ارب روپے کے معاوضے کیلئے دوبارہ احتجاجی تحریک کیلئے لائحہ عمل تیار کریں گے اس موقع پر انجمن تاجران حقیقی ضلع بنوں کے صدر عبدالرؤف قریشی،سرپرست اعلیٰ حاجی ملک مقبول زمان اعوان،پیر اسماعیل شاہ ودیگر عہدیداروں نے کہا کہ وزیرستان اپریشن ضرب عضب میں قبائلی عوام اور وزیرستان کے تاجروں کی قربانیوں کا اعتراف حکومت پاکستان،افواج پاکستان اور پوری دنیا نے کیا ہے لیکن پانچ سال گزرنے کے باوجود وزیرستان کے تاجروں کو نقصانا ت کے ازالے کیلئے منظور شدہ معاوضہ نہ ملنا ظلم ہے لہذا وفاقی حکومت،صوبائی حکومت،کمشنر بنوں اور وزیرستان انتظامیہ وزیرستان کے تاجروں کو جلد از جلد ان کا حق دیں ورنہ وزیرستان کے تاجروں کا پہلے بھی بنوں کی تاجر برادری نے ساتھ دیا ہے اور آئندہ بھی ان کے شانہ بشانہ ہر قسم کے احتجاج میں ساتھ دیں گے۔

مزید : صفحہ اول