کرونا وائرس کا خطرہ، بیرون ملک سے برطانیہ پہنچنے والے طیاروں کے مسافروں کے ساتھ کیا سلوک ہو رہا ہے؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

کرونا وائرس کا خطرہ، بیرون ملک سے برطانیہ پہنچنے والے طیاروں کے مسافروں کے ...
کرونا وائرس کا خطرہ، بیرون ملک سے برطانیہ پہنچنے والے طیاروں کے مسافروں کے ساتھ کیا سلوک ہو رہا ہے؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) کرونا وائرس کا خوف پوری دنیا کو لاحق ہے اور ہر ملک اپنے تئیں ہر ممکن اقدامات کر رہا ہے کہ اس وائرس کو ملک میں داخل ہونے سے روکا جا سکے۔ برطانیہ میں ایئرپورٹس پر ایسے سخت اقدامات کیے جا رہے ہیں کہ میل آن لائن کے مطابق ملک میں اترنے والی ہر پرواز کو تارکول پر ہی گھنٹوں روکے رکھا جاتا ہے اور مشکوک مسافروں کو طیارے سے اتار کر وہی لگائے جانے والے ایمرجنسی خیموں میں طبی قید میں رکھ لیا جاتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ روز برٹش ایئرویز کی ایک پرواز کوالالمپور سے لندن کے ہیتھرو ایئرپورٹ پر اتری جس میں 8افراد کی ایک فیملی سوار تھی۔ جہاز کو تارکول پر روک لیا گیا اور طبی عملے حفاظتی سوٹ پہنے جہاز میں سوار ہو کر مسافروں کی سکریننگ کرنے لگا۔ اس فیملی کے آٹھوں افراد کو جہاز سے اتار کر پرائیویسی ٹینٹ میں ڈال دیا گیا، کیونکہ ان میں وائرس کی موجودگی کا شبہ تھا۔ اسی طرح یونائیٹڈ ایئرلائنز کی سین فرانسسکو سے آنے والی پرواز کے مسافروں گھنٹوں طیارے میں رکھا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے کیے جانے والے اضافی اقدامات کی وجہ سے ایئرپورٹس پر پروازوں کی تاخیر معمول بن گئی ہے ۔ بالخصوص ملک میں آنے والی ہر پرواز کے مسافروں کو گھنٹوں طیارے کے اندر بیٹھنا پڑ رہا ہے۔واضح رہے کہ اب تک دنیا بھر میں کورونا وائرس کے 65ہزار سے زائد مریض سامنے آ چکے ہیں اور اس سے 1400لوگوں کی ہلاکت ہو چکی ہیں۔ لگ بھگ سبھی ہلاکتیں چین میں ہوئی ہیں۔

مزید : برطانیہ