”چین پر انحصار چھوڑ دیں“ آئی ایم ایف نے پاکستان کو پیغام دے دیا

”چین پر انحصار چھوڑ دیں“ آئی ایم ایف نے پاکستان کو پیغام دے دیا
”چین پر انحصار چھوڑ دیں“ آئی ایم ایف نے پاکستان کو پیغام دے دیا

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان میں موجود آئی ایم ایف کے وفد نے یہاں قیام کی مدت بڑھا دی ہے کیونکہ تاحال پاکستانی حکومت اور وفد کے درمیان اتفاق رائے پیدا نہیں ہو سکا اور فریقین آمدنی اور خرچ کے درمیان فرق، توانائی اور مہنگائی وغیرہ جیسے معاملات پر اپنے اپنے موقف پراڑے ہوئے ہیں۔ تاہم دی نیوز کے مطابق ان مذاکرات میں آئی ایم ایف نے پاکستان سے یہ مطالبہ بھی کر دیا ہے کہ وہ تجارت اور کامرس کے حوالے سے اپنا چین پر انحصار ختم کرے۔ آئی ایم کا کہنا ہے کہ پاکستان تجارت اور کامرس کے حوالے سے چین سے ہٹ کردیگر بین الاقوامی آپشنز پر غور کرے اور دیگر ممالک کے ساتھ بھی فری ٹریڈ کے معاہدے کرے۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ جمعرات کے روز بھی مذاکرات میں پاکستانی حکام اور آئی ایم ایف کا وفد آمدنی بڑھانے کے لیے اقدامات پر بات کرتے رہے۔ ایف بی آر چاہتا ہے کہ آئی ایم ایف آمدنی کے مقرر کردہ 5ہزار 238ارب روپے کے ٹارگٹ پر نظرثانی کرے لیکن آئی ایم ایف ٹیکس بیس کو مستقل بنیادوں پر وسیع کرنا چاہتا ہے۔ ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف کی ٹیم کا کہنا تھا کہ ”آئی ایم ایف کب تک ایف بی آر کی آمدنی بڑھانے کی کوششوں میں ناکامی پر نرم رویہ اپناتا رہے گا۔“آئی ایم ایف کی ٹیم کا کہنا تھا کہ ”اگر ضرورت پڑتی ہے تو پاکستانی حکومت کو صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے آئندہ مالی سال کا انتظار کیے بغیر پہلے ہی اقدامات کرنے ہوں گے تاکہ صورتحال کو مزید خراب ہونے سے بچایا جا سکے۔“

مزید : علاقائی /اسلام آباد