سینیٹ، انسانی اعضا، ٹشوز کی منتقلی کا بل متفقہ منظور، خانیوال واقعہ پر تشویش کااظہار بھارتی طالبہ مسکان کو خراج تحسین

سینیٹ، انسانی اعضا، ٹشوز کی منتقلی کا بل متفقہ منظور، خانیوال واقعہ پر تشویش ...

  

        اسلام آباد (نیوزایجنسیاں)اراکین سینٹ نے خانیوال میں ہونے والے واقعہ پر سخت تشویش کااظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ واقعہ کی تحقیقات ہونی چاہیے، معاملہ انسانی حقوق کمیٹی کو بھیجا جائے۔ پیر کو سینٹ اجلاس میں اظہار خیا ل کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن)کے پارلیمانی لیڈر اعظم نذیر تارڑ نے کہاکہ گزشتہ روز ملک میں ایک اور اندوہناک واقعہ ہو گیا،سری لنکن شہری کی افسوسناک موت کے زخمی ابھی تازہ ہیں۔ انہوں نے کہاکہ خانیوال میں ہونے والے واقعے پر ایوان میں بحث کا موقع دیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ اس طرح کے واقعات ملک کی بدنامی کا باعث بن رہے ہیں، افسوناک واقعے نے ایک بار پھر انسانیت کو شرمندہ کر دیا۔سینٹر شیری رحمان نے کہاکہ خانیوال کے واقعے کی تحقیقات ہونی چاہیے،اس معاملے کو انسانی حقوق کمیٹی کو بھیجا جائے۔سینیٹ نے محدود ذمہ داری شراکت ترمیمی بل 2022متعلقہ کمیٹی کو بھجوادیا۔ پیر کو تحریک سینیٹر مشتاق احمد نے ایوان میں پیش کی اور کہاکہ حکومت نے ایف اے ٹی ایف کے پریشر میں 12قوانین منظور کئے، بہت سی چیزیں آئین اور قانون سے متصادم پیش کی گئی۔ انہوں نے کہاکہ اگر ٹیریئر فنانسنگ کا ایشو ہوتا تو پاکستان کا نام ایف سے ٹی ایف گرے لسٹ سے نکل جاتا۔وزیر مملکت پارلیمانی امور علی محمد خان نے تحریک پیش کرنے کی مخالفت کی اور کہاکہ گزشتہ سال بھی ایسا ہی بل پیش کرنے کی کوشش کی گئی تھی۔اپوزیشن نے ایوان میں اکثریت ہونے کے باعث بل پیش کرنے کی تحریک منظور کی،چیئرمین سینیٹ نے بل متعلقہ قائمہ کمیٹی کو بھجوا دیا۔سینیٹر کہدہ بابر نے سینیٹ کے ایک سال کے دن 110 سے کم کرکے90دن کرنے کا دستور میں ترمیم بل سینیٹ میں پیش کردیا جبکہ حکومت کی طرف سے بل کی مخالفت کر دی گئی ہے جبکہ چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف علی ظفر نے دستور اور قانون میں مختلف ترامیم کے لئے نو تحاریک پیش کردیں نو تحاریک میں قائمہ کمیٹیوں کی رپورٹس پیش کرنے کے لئے دوماہ کا وقت مانگا گیا ہے جبکہ دستور میں مختلف ترامیم کے لئے سینیٹ نے رپورٹس پیش کرنے کے لئے دوماہ مزید وقت دے دیا تحریک سینیٹر علی ظفر نے پیش کی گذشتہ روز چئیرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی زیر صدارت سینیٹ کے اجلاس میں سینیٹر کہدہ بابر نے سینیٹ کے ایک سال کے دن 110 سے کم کرکے90دن کرنے کا دستور میں ترمیم بل سینیٹ میں پیش کیا جبکہ حکومت کی جانب سے بل جی مخالفت کی گئی  اس متعلق وزیر مملکت علی محمد  جب وزیر اعظم چوبیس میں اٹھارہ گھنٹے کام کرتا ہے تو سینیٹ بھی زیادہ کام کرے ہم تو سینیٹ کے کام کرنے کے دن اور کام بڑھانا چاہتے ہیں یہ کم کرنا چاہتے ہیں بل متعلقہ قائمہ کمیٹی کو بھیج دیا گیا،کرناٹکا میں حجاب کیلئے جرات مندی کا مظاہرہ کرنے والی طالبہ مسکان کیلئے ایوان بالا میں تقاریر کی گئی اور خراج تحسین پیش کیا گیا۔سینیٹر عبدالغفور حیدری نے کہا ہے کہ ہندوستان کا سیکولر چہرہ بے نقاب ہوگیا ہندوستان میں مسلمان بچی نے جرات کو مظاہرہ کیا ہے جبکہ ہندوستان میں مسلمانوں کو نشانہ بنایا جارہا ہیمسلمانوں کے ساتھ ہونے والے واقعات کی شدید مذمت کرتا ہوں اس معاملے بھارتی سفارتکاروں کو بلا کر جواب طلبہ کی جائے  جبکہ ہمیں ہاؤس کی طرف سے قرارداد مذمت پاس کرنا چاہیے۔سینیٹ نے انسانی اعضا اور ٹشوز کی منتقلی کا بل 2022متفقہ طورپر منظور کرلیا ہے بل جہانگیر خان ترین کی بہن سینیٹر سیمی ایزدی نے پیش کیا تھا۔

سینیٹ

مزید :

صفحہ اول -