لڑکیوں کی تعلیم کو اہم ترقیاتی ترجیح قرار دیا جائے‘ ایم پی ایز 

لڑکیوں کی تعلیم کو اہم ترقیاتی ترجیح قرار دیا جائے‘ ایم پی ایز 

  

پشاور(سٹی رپورٹر) خیبرپختونخوا وومن پارلیمنٹری کاکس اور سماجی تنظیم وینز کے زیر اہتمام لڑکیوں کی تعلیم کے حوالے سے ایک مشاورتی نشست کا اہتمام کیا گیا جس میں ارکان اسمبلی محکمہ تعلیم کے نمائندوں، صوبائی کمیشن برائے اطفال اور خیبرپختونخوا کمیشن برائے ترقی نسواں نے بھی شرکت کی۔ وومن پارلیمنٹری کاکس کی جانب سے محکمہ تعلیم کے نمائندوں کو لڑکیوں کی تعلیم کو بہتر بنانے کے حوالے سے تجاویز پر مشتمل ایک دستاویز بھی پیش کی گئی۔خیبرپختونخوا کے وزیر لیبر و انسانی حقوق شوکت یوسفزئی اور وزیراعلی کے مشیر برائے مالیات تاج محمد، رکن صوبائی اسمبلی ضیا ء اللہ بنگش اور وومن پارلیمنٹری کاکس کی نائب صدر اور اسٹینڈنگ کمیٹی برائے تعلیم کی چیئرپرسن مدیحہ نثار کی جانب سے دستاویز محکمہ تعلیم کے نمائندوں کو حوالے کیا گیا۔ دستاویز میں بچپن کی شادی، غربت،صنفی تفریق، فرسودہ روایات،اسکولوں کی کمی، خواتین اور اساتذہ کی کمی اور سکولوں میں نامناسب سہولیات کو لڑکیوں کی تعلیم میں بڑی رکاوٹیں قرار دیا گیا ہے۔خواتین ارکان اسمبلی کی جانب سے دی گئی دستاویز میں محکمہ تعلیم کو دی جانے والی سفارشات میں کہا گیا ہے کہ لڑکیوں کی تعلیم کو بہتر بنانے کے حوالے سے ترقیاتی بجٹ میں اضافہ کیا جائے خصوصی اسکیم متعارف کرائی جائے اور علمائے کرام کی مدد سے بڑے پیمانے پر آگاہی مہم چلانے کا بندوبست کیا جائے۔وزیر انسانی حقوق شوکت یوسفزئی نے اس موقع پر کہا کہ حکومت خیبرپختونخوا نے لڑکیوں کی تعلیم کو بہتر بنانے کے حوالے سے بے مثال اقدامات کیے ہیں لیکن وسائل کی کمی اور بڑھتی ہوئی آبادی کی وجہ سے مسائل موجود ہیں حکومت خیبرپختونخوا ہرممکن کوشش کرے گی کہ صوبہ بھر میں کوئی بھی بچہ بالخصوص لڑکیاں معیاری تعلیم سے محروم نہ رہیں۔وزیر اعلی کے معاون خصوصی برائے مالیات تاج محمد نے کہا کہ تعلیم کو بہتر بنانے کے حوالے سے وسائل میں اضافہ اور مختص کردہ وسائل کا بہترین استعمال لڑکیوں کی تعلیم کو بہتر بنانے کے حوالے سے ناگزیر ہے.صوبائی اسمبلی میں اپوزیشن کی رکن شگفتہ ملک نے کہا صوبائی اسمبلی کے خواتین کاکس کی جانب سے تجویز کردہ سفارشات کو اہم پیش رفت قرار دیا اور کہا کہ محکمہ تعلیم ان پر عملدرآمد کر کے بہترین نتائج حاصل کر سکتا ہے سماجی تنظیم بلیو وینز اور پاکستان ایجوکیشن نیٹ ورک کہ نمائندہ قمر نسیم نے کہا کہ حکومت خیبر پختونخوا, سیاسی جماعتیں, اراکین اسمبلی اور سماجی تنظیمیں باہمی اشتراک سے پائیدار ترقی کے اہداف کو حاصل کرنے میں کامیاب ہو سکتی ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -