گولڈن ٹیمپل میں سکھوں کو مارنے کیلئے’ آپریشن بلیو سٹار میں برطانوی مدد نہیں لی : ریٹائرڈبھارتی جرنیل :ہدوستانی حکومت مسلسل خاموش

گولڈن ٹیمپل میں سکھوں کو مارنے کیلئے’ آپریشن بلیو سٹار میں برطانوی مدد ...
 گولڈن ٹیمپل میں سکھوں کو مارنے کیلئے’ آپریشن بلیو سٹار میں برطانوی مدد نہیں لی : ریٹائرڈبھارتی جرنیل :ہدوستانی حکومت مسلسل خاموش

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن ( مانیٹرنگ  ڈیسک)سکھوں کے قدس مقام گولڈن ٹیمپل پر اندرا گاندھی کے دور میں ہونے والے سکھ کش آپریشن بلیو سٹارکی فوجی کارروائی کےانچارج بھارتی جرنیل نے  اس حملے کی منصوبہ بندی میں برطانوی فوج کے خصوصی دستوں  کی نبھارت کی مدد کی  اطلاعات کو مسترد کردیا ہے۔ امرتسر میں واقع سکھوں کے مقدس مقام گولڈن ٹیمپل میں 1984 میں    اس ’آپریشن بلیو سٹار‘ میں  آزادی پسند سکھوں کے سربراہ جرنیل سنگھ بِھنڈرا سمیت سینکڑوں لوگ ہلاک ہوئے تھے۔بھارتی حکومت کا موقف تھا کہ حملے میں 87 فوجیوں سمیت 400 افراد ہلاک ہوئے تھے جبکہ سکھوں کا دعویٰ ہے کہ اس حملے میں ہزاروں لوگ مارے گئے تھے جن میں وہاں عبادت کے لیے آنے والے افراد بھی شامل تھے۔ گولڈن ٹیمپل پر حملے کے چار ماہ بعد  ۔بھارتی وزیراعظم اندرا گاندھی کوان کے دو سکھ محافظوں نے ہلاک کر دیا تھا جس کے بعد پھوٹ پڑنے والے فسادات میں  بھی کم از کم تین ہزار سکھوں کو ہلاک کیا گیا تھا۔برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے اس آپریشن میں برطانوی امداد کی اطلاعات کی انکوائری کا حکم دے رکھا ہے ۔برطانوی رکنِ پارلیمان ٹام واٹسن نے بی بی سی ایشیئن نیٹ ورک کو بتایا کہ 30 سال کا عرصہ گزرنے کے بعد حال ہی میں منکشف ہونے والی دستاویزات ان کے اس دعوے کی تائید کرتی ہیں کہ برطانیہ نے اس آپریشن میں بھارت کی مدد کی تھی اور ’میں بہت حیران ہوں کیونکہ اس کارروائی کی منصوبہ بندی اور اس پر عمل درآمد بھارت میں فوجی کمانڈوز نے ہی کیا تھا۔‘بھارت کے79 سالہ ریٹائرڈ جنرل برار نے کہا کہ ’ہمیں کوئی مدد نہیں دی گئی اور نہ ہی کوئی مشورہ دیا گیا۔ اس آپریشن کی منصوبہ بندی میں مدد دینے کے لیے برطانوی حکومت کا کوئی نمائندہ ہم سے آ کر نہیں ملا تھا۔‘اس سے قبل برطانوی رکن پارلیمان ٹام واٹسن نے بی بی سی ایشیئن نیٹ ورک کو بتایا کہ انتہائی خفیہ دستاویزات کے مطابق برطانوی وزیرِ اعظم مارگریٹ تھیچر نے برطانیہ کی سپیشل ایئر سروسز (ایس اے ایس) کو گولڈن ٹیمپل آپریشن میں بھارتی سکیورٹی فورسز کی مدد کی منظوری دی تھی۔یہاں یہ امر قابلِ ذکر ہے کہبھارتی حکومت کی جانب سے  ابھی تک اس بارے میں کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

 

 

مزید : بین الاقوامی