سٹیٹ بینک شرح سودمیں تین فیصدتک کمی کرے: اعجازاے ممتاز

سٹیٹ بینک شرح سودمیں تین فیصدتک کمی کرے: اعجازاے ممتاز

  

لاہور(کامرس رپورٹر)لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے سٹیٹ بینک آف پاکستان پر زور دیا ہے کہ ڈسکاﺅنٹ ریٹ میں کم از کم تین فیصد کمی کرکے انڈسٹریل سیکٹر کی مدد کرے جسے توانائی کی قلت سمیت دیگر بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے۔ لاہور چیمبر کے صدر اعجاز اے ممتاز نے کہا کہ ڈسکاﺅنٹ ریٹ میں تین فیصد کمی سے صنعتی سرگرمیوں کو فروغ حاصل ہوگا ، روزگار کے نئے مواقع پیدا ہونگے اور حکومت کے محاصل بڑھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سٹیٹ بینک کے اس قدم سے پاکستانی مصنوعات عالمی منڈی میں زیادہ بہتر مقام حاصل کرسکیں گی

کیونکہ ڈسکاﺅنٹ ریٹ میں کمی بیشی ہمیشہ صنعتوں کی پیداواری لاگت پر اثر انداز ہوتی ہے۔ اعجاز اے ممتاز نے کہا کہ پالیسی سازوں کے لیے یہ حقیقت چشم کشا ہونی چاہیے کہ جاپان، سویڈن اور سویٹزرلینڈ زیرو فیصد ڈسکاﺅنٹ ریٹ پر اپنے صنعتی شعبے کی مالی معاونت کررہے ہیں جبکہ پاکستان میں ڈسکاﺅنٹ ریٹ ساڑھے نو فیصد ہے۔ لاہور چیمبر کے صدر نے کہا کہ سٹیٹ بینک آف پاکستان کو اس حقیقت کا اچھی طرح ادراک ہونا چاہیے کہ سخت مانیٹری پالیسی کسی کے مفاد میں نہیں۔ اگر مانیٹری پالیسی میں ڈسکاﺅنٹ ریٹ نصف سے ایک فیصد کم کیا گیا تو اس کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ سٹیٹ بینک آف پاکستان زمینی حقائق کو مدّ نظر رکھے اور ڈسکاﺅنٹ ریٹ میں کم از کم تین فیصد کمی کا اعلان کرے۔

مزید :

کامرس -