مرید کے،ڈاکوﺅں نے مزاحمت پر فائرنگ کر کے دو بچوں کے باپ کو قتل کر دیا

مرید کے،ڈاکوﺅں نے مزاحمت پر فائرنگ کر کے دو بچوں کے باپ کو قتل کر دیا

  

                                مریدکے(نامہ نگار) تھانہ سٹی کے علاقہ میں شہر کے وسط میں ناکہ لگا کر لوٹ مار کے دوران ڈاکوو¿ںنے معمولی مزاحمت پر فائرنگ کرکے دو کمسن بچوں کے باپ کو قتل کر دیا جبکہ دیگر وارداتوں میں متعدد افراد کو نقدی اور قیمتی اشیاءسے محروم کر دیا گیا۔ پولیس نے روزانہ لوٹ مار میں مصروف ڈاکوو¿ںکی گرفتاری کے بجائے چرس اور شراب رکھنے والو ںکو خطرناک مجر م بنا کر کاروائیاں ڈالنا شروع کر دیں۔ ڈکیتی کے دوران قتل ہونے والے ٹیکسی ڈرائیور کے ورثاءنے پولیس پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے مقدمہ درج کرانے سے انکار کر دیا۔ بتایا گیا ہے کہ نواحی علاقہ حدوکے کے دینی مدرسہ نصرت الاسلام کی سربراہ کا جواں سالہ بیٹا جمشید کیری ڈبہ چلاتا تھا اور رات بارہ بجے کے قریب وہ مسافروں کو لاہور ایئر پورٹ پر چھوڑ کر گھر واپس جا رہا تھا کہ شہر کے وسط میں نہر کنارے پرانا قبرستان کے قریب نا کہ لگائے ڈاکوو¿ں نے اسے گن پوائنٹ پر روک لیا اور مبینہ طور پر معمولی مزاہمت پر اسے فائرنگ کرکے قتل کردیااور فرار ہو گئے۔ نا معلوم شخص کی طرف سے 15پر کال کے بعد خواب غفلت میں سوئی تھانہ سٹی پولیس نے موقع پر پہنچ کر نعش کو قبضہ میں لے لیا۔ مقتول کے ورثاءنے پولیس کی تفتیش اور اس کے روّیئے سے دلبرداشتہ ہو کر نعش کو پوسٹمارٹم اور مقدمہ درج کرانے سے انکار کر دیا اور نعش اپنے آبائی گاو¿ں رستم پور لے گئے۔ ایس ایچ او تھانہ سٹی کی درخواست پر ورثاءنے نعش کا پوسٹمارٹم کرانے پر رضا مندی ظاہر کر دی۔ پولیس کے مطابق وہ صرف رات11بجے تک عام شہریوں کے لیے ناکہ لگاتے ہیں۔ دریں اثناءحدوکے بھیانوالہ روڈ پر بھی مسلح ڈاکوو¿ں نے راہگیروں کو لوٹنے کے دوران فائرنگ کی تاہم کوئی جانی نقصان نہ ہوا جبکہ نماز فجر کے بعد ریلوے اسٹیشن پبلک پارک کے سامنے ناکہ لگائے ڈاکوو¿ں نے عنصر مغل سمیت متعدد شہریوں کو لوٹ لیا مگر پولیس شہر بھر سے غائب رہی۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ پورا شہر گزشتہ ایک ماہ سے چوروں اور ڈاکوو¿ں کے نرغے میں ہے مگر نا اہل ڈی ایس پی سرکل مریدکے کی سربراہی میں تھانہ سٹی پولیس صرف چرس بھرا ایک سگریٹ رکھنے والے کو ہی خطرناک مجرم بنا کر کاروائی پوری کر رہی ہے۔ شہریوں نے آئی جی پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ علاقہ میں فرض شناس اہلکاروں کو تعینات کرکے شہریوں کو تحفظ فراہم کیا جائے۔

مزید :

علاقائی -