دہشتگردی کیخلاف نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کیلئے فوری اقدامات پر اتفاق

دہشتگردی کیخلاف نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کیلئے فوری اقدامات پر اتفاق

  

 لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارت یہاں ایپکس کمیٹی کا اجلاس ہوا، جس میں کور کمانڈر لاہور لیفٹیننٹ جنرل نوید زمان، ڈی جی رینجرز پنجاب میجر جنرل خان طاہر جاوید خان، جنرل آفیسر کمانڈنگ 10 ڈویژن میجر جنرل عامر عباسی، صوبائی وزیر داخلہ کرنل (ر) شجاع خانزادہ، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل پولیس، سیکرٹری داخلہ اور اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔اجلاس کے دوران دہشت گردی کے خلاف نیشنل ایکشن پلان پر موثر طور پر عملدرآمدکیلئے فوری اقدامات پر اتفاق کیا گیا۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے ایپکس کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف نیشنل ایکشن پلان پر اتفاق رائے کے بعد فوری فیصلے کئے گئے جن پر عملدر آمدکے مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں۔ موجودہ صورتحال میں غیرمعمولی اور فوری اقدامات کرنا انتہائی ضروری ہیں۔انہوں نے کہا کہ پشاور میں معصوم بچوں کی شہادت نے پوری قوم کو یک جان د وقالب کر دیا ہے۔معصوم بچوں کو جس بے دردی سے شہید کیا گیا ایسی بربریت اور درندگی کی مثال عصر حاضر کی تاریخ میں نہیں ملتی۔پاکستان کی سیاسی، عسکری اور دینی قیادت دہشت گردی کے خلاف ایک صفحے پر ہے۔انہوں نے کہا کہ تاریخ کے اس نازک اور اہم موڑ پر ہم سب پر بڑی ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔پاکستان کی بقاء کی جنگ جیتنے کے سوا کوئی آپشن نہیں۔دہشت گرد پاکستان کے دشمن ہیں ، ان کا ہمیشہ کیلئے خاتمہ کرکے ہی دم لیں گے اور اپنی نسلوں کو محفوظ او رپرامن پاکستان دینے کی قومی ذمہ داری ہر صورت ادا کریں گے۔انہوں نے کہا کہ پاک فوج دنیا کی بہترین تربیت یافتہ اور ڈسپلنڈ فورس ہے۔ افواج پاکستان کے افسران، جوانوں، پولیس افسروں، اہلکاروں اور عام شہریوں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بے مثال قربانیاں دی ہیں جن پرپوری قوم کو بجاطورپر فخر ہے۔اقوام عالم میں ایسی لازوال قربانیوں کی کوئی مثال نہیں ملتی۔ انہوں نے کہاکہ معاشرے کے ہر طبقے کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اپنا بھرپور کردار ادا کرنا ہے اورہر محاذ پر دہشت گردوں اوران کے سہولت کاروں کو شکست فاش دینا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اتحاد اور اتفاق کی قوت سے پاکستان سے دہشت گردی، انتہاپسندی اور فرقہ واریت کے ناسور کا خاتمہ کریں گے اور سفاک درندوں کو پاکستان میں سر چھپانے کی جگہ نہیں ملے گی،پاکستان کی بقاء کیلئے میدان میں نکلنے کا وقت آگیا ہے۔انشاء اللہ تاریخ کا دھارا بدل کر پاکستان کو حقیقی معنوں میں اسلامی فلاحی ریاست بنائیں گے۔اجلاس کے دوران صوبے میں سیکورٹی انتظامات کا تفصیلی جائزہ لیا گیااورعوام کے جان و مال کے تحفظ کیلئے ہرضروری اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا۔اجلاس میں صوبے میں سیکورٹی انتظامات کو فول پروف بنانے کے حوالے سے تجاویز پر تفصیلی غورکیا گیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے لاہور کے علاقے شاد باغ میں شادی ہال کی دیوار گرنے سے جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین اور زخمیوں کیلئے مالی امداد کا اعلان کیا ہے۔ جاں بحق افراد کے لواحقین کو 5، 5 لاکھ جبکہ زخمیوں کو ایک ایک لاکھ روپے کی مالی امداد دی جائے گی۔ وزیراعلیٰ نے واقعہ کی تحقیقات کیلئے کمشنر لاہور ڈویژن عبداللہ خان سنبل کی سربراہی میں کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ کمیٹی آئندہ 48 گھنٹے میں افسوسناک واقعہ کی وجوہات اور ذمہ داروں کا تعین کرکے رپورٹ پیش کرے گی۔ کمیٹی میں رکن قومی اسمبلی پرویز ملک، اراکین صوبائی اسمبلی غزالی بٹ، چوہدری شہباز احمد، ڈی سی او لاہور، ڈی جی 1122 اور ای ڈی او ورکس شامل ہوں گے۔دریں اثناء وزیراعلیٰ نے گوجرانوالہ کے علاقے رمضان پورہ میں گھر کی چھت گرنے سے 2کمسن بھائیوں کے جاں بحق ہونے کے واقعہ پر افسوس کا اظہارکیا اور سوگوار خاندان کے ساتھ ہمدردی اوراظہار تعزیت کرتے ہوئے انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ زخمی افراد کو ہسپتال میں بہترین طبی سہولتیں فراہم کی جائیں۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے یہاں پاکستان مسلم لیگ (ن) سعودی عرب کے وفد اور سماجی شخصیات نے ملاقات کی اور ’’چیف منسٹر زفلڈریلیف فنڈ‘‘ میں مجموعی طور پر 78 لاکھ روپے کے چیک پیش کئے۔ مسلم لیگ (ن) سعودی عرب کے صدر مرزا الطاف، نائب صدر چوہدری شہباز، شہزاداحمد، صدر مسلم لیگ (ن) جدہ سٹی سیٹھ عابد اور سیکرٹری جنرل جدہ خالد جٹ نے 25 لاکھ روپے کا چیک دیا۔ ایم پی اے مہوش سلطانہ نے 5 لاکھ روپے کا چیک پیش کیا۔ سرگودھا سے تعلق رکھنے والے عرفان بٹ اور میاں عبدالجبار نے 48 لاکھ روپے کا چیک دیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دکھی انسانیت کی خدمت کرنے والو ں کا جذبہ لائق تحسین ہے۔ پنجاب میں سیلاب متاثرین کو پانی اترنے سے پہلے شفاف انداز سے مالی امداد پہنچائی گئی۔ حکومت نے اربوں روپے کی رقم امانت سمجھ کر اپنے مصیبت زدہ بہن بھائیو ں پر صرف کی۔ انہو ں نے کہا کہ دکھی انسانیت کی خدمت ایک عبادت سے کم نہیں۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے یہاں وزیر مملکت برائے مذہبی امور و بین المذاہب ہم آہنگی پیر امیرالحسنات نے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور اور بین المذاہب ہم آہنگی کے فروغ کیلئے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا کہدہشت گردی اورانتہاء پسندی کے ناسور کے خاتمے کیلئے پوری قوم میں مثالی اتحاد واتفاق پیدا ہوچکا ہے ۔دہشت گرد پاکستان کے دشمن ہیں جن سے آ ہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں معاشرے کے ہر طبقے کا کردارانتہائی اہمیت کا حامل ہے ۔اس جنگ میں آخری جیت پاکستان اور 18کروڑ عوام کی ہوگی۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے یہاں معروف مینجمنٹ کنسلٹنٹ گروپ مکینزے کے وفد نے ملاقات کی۔وفد میں مکینزے کے ہینس مارٹن سٹاک مائیر، کنٹری منیجرپاکستان سلمان احمد، علی مالک اور تیمور خان شامل تھے۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا کہ صوبے میں عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف کی فراہمی کیلئے گڈگورننس اورخدمات کی بہترین انداز میں فراہمی پر توجہ دی جارہی ہے ۔آئندہ ساڑھے تین برس کے دوران اہم سماجی شعبوں میں اصلاحات متعارف کرائیں گے۔ تعلیم،صحت،زراعت،لائیوسٹاک،فنی تعلیم،اربن ڈویلپمنٹ،امن عامہ اوردیہی علاقوں کی ترقی ترجیحات میں شامل ہے۔انہوں نے کہا کہ خادم پنجاب گرین روڈ پروگرا م کے تحت دیہی علاقوں میں سڑکوں کی بحالی کا منصوبہ بنایاگیا ہے ۔رواں مالی سال کے دوران خادم پنجاب گرین روڈ پروگرام کیلئے15ارب روپے مختص کیے گئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اہداف طے کر کے ان کے حصول کیلئے بھر پور اقدامات کرنا ضروری ہے ۔عزم اورمحنت سے ضائع شدہ وقت کاازالہ کیا جائے گا۔2018ء تک20لاکھ نوجوانوں کو فنی تعلیم دینے کا ہدف مقرر کیا گیاہے۔انہوں نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے فروغ کیلئے ٹھوس اقدامات کیے گئے ہیں ۔صوبے کی جی ڈی پی میں اضافے کیلئے اہداف مقررکیے گئے ہیں ۔سکل ڈویلپمنٹ پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے ۔ انہوں نے چےئرمین منصوبہ بندی وترقیات کی سربراہی میں متعلقہ محکموں کے حکام پر مشتمل کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ کمیٹی کے اراکین مکنیزے کے ساتھ ملکر سماجی شعبوں کی بہتری کے حوالے سے لائحہ عمل مرتب کریں اور اہداف طے کر کے ان کے حصول کیلئے ٹائم لائن مقررکی جائے۔اس موقع پرصوبائی وزیر صنعت چوہدری محمد شفیق، اراکین اسمبلی ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا، زعیم حسین قادری، ایڈیشنل چیف سیکرٹری، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، ایڈیشنل چیف سیکرٹری توانائی، سیکرٹریز صنعت، اطلاعات، چیئرمین پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ، چیئرمین پی وی ٹی سی، چیئرمین ٹیوٹا، ڈی جی ایل ڈی اے اورمتعلقہ حکام بھی موجود تھے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارتیہاں اجلاس ہوا جس میں قائداعظم سولرپارک بہاولپور میں 100 میگاواٹ سولر منصوبے پر کا م کی پیشرفت کا جائزہ لیا گیا۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری توانائی، چیف ایگزیکٹو آفیسر قائداعظم سولر پارک، چیئرمین و چیف ایگزیکٹو آفیسر پنجاب پاور ڈویلپمنٹ کمپنی ، منیجنگ ڈائریکٹر این ٹی ڈی سی ،چین کی توانائی کمپنی کے جنرل منیجرانٹرنیشنل ڈویژن ہاؤ پینگ اور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت نے جنوبی پنجاب میں پاکستان کا اپنی نوعیت کا پہلا اور منفرد قائد اعظم سولر پارک بنایا ہے۔قائد اعظم سولر پارک میں پنجاب حکومت کا 100میگا واٹ کا منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں ہے۔ 100میگا واٹ کے منصوبے کو انتہائی شفافیت اور تیز رفتاری کے ساتھ مکمل کیا جار ہاہے۔انہوں نے کہاکہ 100میگاواٹ کے سولر منصوبے میں پنجاب حکومت کے سابق منصوبوں کی طرح اعلیٰ معیارکو یقینی بنایا گیاہے۔منصوبے کاجلد افتتاح ہوگا۔پنجاب حکومت 100میگا واٹ کاسولر منصوبہ اپنے وسائل سے لگا رہی ہے۔

مزید :

صفحہ اول -