اکبر بگٹی کیس ،پرویز مشرف ،آفتاب شیر پاﺅ اور شعیب نوشیر وانی کے خلاف فرد جرم عائد

اکبر بگٹی کیس ،پرویز مشرف ،آفتاب شیر پاﺅ اور شعیب نوشیر وانی کے خلاف فرد جرم ...

  

                                           کوئٹہ(اے این این)نواب اکبر بگٹی قتل کیس میں سابق صدر پرویز مشرف سمیت آفتاب شیرپاو¿،شعیب نوشیروانی کے خلاف فرد جرم عائد،ملزمان کا صحت جرم سے انکار،انسداد دہشتگردی کی عدالت نے استغاثہ سے شہادتیں طلب کر لیں،4فروری سے کیس کی روزانہ کی بنیاد پر سماعت کا فیصلہ،عدالت میں پرویز مشرف کے وکیل اور دو ضامن جبکہ آفتاب شیرپاو¿ اور شعیب نوشیروانی خود پیش ہوئے۔بدھ کو کوئٹہ کی انسداد دہشتگردی کی عدالت میں اکبر بگٹی قتل کیس کی سماعت ہوئی ،کیس کی سماعت انسداد دہشتگردی کی عدالت کے جج آفتاب لون نے کی۔ سابق وزیر داخلہ آفتاب شیر پاﺅ اور سابق صوبائی وزیر داخلہ بلوچستان میر شعیب نوشیروانی پیش ہوئے جبکہ سابق صدرپرویز مشرف کے وکیل ذیشان چیمہ اور دو ضامن پیش ہوئے ۔سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل ذیشان چیمہ نے پرویز مشرف کوحاضری سے مستثنیٰ قرار دینے کی درخواست عدالت کے سامنے پیش کی ۔ذیشان چیمہ نے سابق صدر پرویز مشرف کی میڈیکل رپورٹ بھی عدالت کے سامنے پیش کی ۔اس موقع پر عدالت نے میڈیکل بورڈ نہ بنائے جانے پر سخت برہمی کااظہار کیا اور کہاکہ میڈیکل بورڈ کیوں تشکیل نہیں دیاگیا ۔ڈی جی ہیلتھ بلوچستان کو اگلی سماعت پر پیش ہونے کا حکم دے دیا۔اس موقع پرجمیل اکبر بگٹی کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے عدالت کو بتایاکہ مرکزی ملزم کی غیر حاضری پر چارج فریم نہیں کیا جاسکتا جس پر سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل ذیشان چیمہ نے عدالت کو بتایاکہ ملزم کی عدم حاضری کے باوجود چارج فریم کیا جاسکتاہے ۔عدالت نے سماعت میں ایک گھنٹے کا وقفہ کیا ۔وقفے کے بعد جب دوبارہ سماعت شروع ہوئی تو عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف،آفتاب شیرپاو¿ اور شعیب نوشیروانی پر فرد جرم عائد کرنے کا حکم پڑھ کر سنایا،جس پر ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا۔عدالت نے استغاثہ سے شہادتیں طلب کرتے ہوئے کہا کہ 4فروری سے کیس کی سماعت روزانہ کی بنیادپر ہو گی۔واضح رہے کہ نواب اکبر بگٹی کے صاحبزادے جمیل اکبر بگٹی کی جانب سے 2009 میں والد کے قتل کا مقدمہ درج کرایا گیا تھا جس میں سابق صدر پرویز مشرف، سابق وفاقی وزیرداخلہ آفتاب احمد خان شیرپا، صوبائی وزیرداخلہ شعیب نوشیروانی اور اس وقت کے گورنر اویس غنی کو نامزد کیا تھا۔

مزید :

صفحہ اول -