جموں کشمیر کی اکثریت پاکستان کے ساتھ ہے‘ انجینئر رشید

جموں کشمیر کی اکثریت پاکستان کے ساتھ ہے‘ انجینئر رشید

سری نگر(کے پی آئی)عوامی اتحاد پارٹی کے صدر انجینئر رشید نے جموں کشمیر میں ہونے والی کسی بھی سرگرمی کے لئے پاکستان کو ذمہ دار قرار دینے سے احتراز کرنے کا نئی دلی کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ اسے اسکے برعکس حقائق کو تسلیم کرنا سیکھنا چایئے بلکہ اسکی ضرورت محسوس کرنی چایئے۔انہوں نے کہا کہ اگر نئی دلی کشمیر میں ہونے والی کسی بھی سرگرمی کو پاکستان کی کارستانی مانتی ہے تو بہ الفاظِ دیگر اسے اس بات کا احساس ہے کہ جموں کشمیر کی اکثریت پاکستان کے ساتھ ہے لہذا دلی والوں کو فیصلہ کرنا چاہیے کہ وہ اس بات کو قبول کرے یا پھر پاکستان پر وقت بے وقت الزام لگانے سے باز رہے۔انہوں نے کہا کہ ریاستی انتظامیہ کو پلوامہ کے لوگوں کو حراسان و پریشان کرنے کی بجائے معاملے کو خوش اسلوبی کے ساتھ نپٹا لینا چایئے۔ جنرل کونسل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انجینئر رشید نے انتظامیہ کی جانب سے یادگار کے قیام کو روکنے کے لئے طاقت کا استعمال کرنے کو غیر ضروری قرار دیا اور کہا کہ مزار ہائے شہدا،ہر کشمیری،یہاں کا ہر گاو ں اور گھراپنے آپ میں ایک یاد گار ہے اور یہ ایک ایسی حقیقت ہے کہ جسے جھٹلایا نہیں جا سکتا ۔

انہوں نے سوال کرتے ہوئے کہا کہ اگر حکومت کی ہی طرح یہاں کے لوگ بھی عسکریت پسندوں کو دہشت گرد سمجھتے ہوتے تو پھر ریاست کی اکثریت ان دہشت گردوں کی حامی کیسے ہوسکتی تھی۔ا نہوں نے مزید کہا کہ دسویں جماعت کے حال ہی ظاہر ہوئے نتائج میں غالب افضل گورو اور ایک اور جاں بحق ہوئے عسکریت پسندکے بیٹے نذرجہانگیر کی اعلی کارکردگی سے ان لوگوں کی، جو دن رات عسکریت پسندیسے تباہی ہونے کا رونا روتے ہوئے یہ واویلا کرتے پھرتے ہیں کہ عسکریت پسند تباہی کے ذمہ دار ہیں ،آنکھیں کھل جانی چاہیءں۔

مزید : عالمی منظر