پیغام نبوت

پیغام نبوت

اَسلاف کی ہر قربانی کا اِک اِک قطرہ تابندہ ہے

ہر دل کی دھڑکن کہتی ہے پیغامِ نبوت زندہ ہے

دل میں حق کا ارمان لئے، سینے میں اک طوفان لئے

اک ہاتھ میں سنت کا پرچم، اک ہاتھ میں ہیں قرآن لئے

ہر آن کتاب و سنت کی دعوت کا نگر تابندہ ہے

ہر دل کی دھڑکن کہتی ہے پیغامِ نبوت زندہ ہے

ہر اِک جادہ، ہر اک رستہ، ہر ایک گروہ ہر اک دستہ

پیغامِ نبوت کا جذبہ ہر اک سینے میں ہے بستا

ہر ایک نظر ہے منزل پر ہر ایک قدم پائندہ ہے

ہر دل کی دھڑکن کہتی ہے پیغامِ نبوت زندہ ہے

پیغامِ نبیؐ کے رکھوالے، ہم امن و محبت کے پالے

سرشار مئے توحید سے ہم اور سنت کے ہیں متوالے

ہر دَور ہمارا ہے جعفر ماضی ہے یا آئندہ ہے

ہردل کی دھڑکن کہتی ہے پیغامِ نبوت زندہ ہے

مزید : ایڈیشن 1