قومی تاریخ میں حفیظ جالندھری کا کردار ہمیشہ یاد رکھا جائے گا،پروفیسر لطیف نظامی

قومی تاریخ میں حفیظ جالندھری کا کردار ہمیشہ یاد رکھا جائے گا،پروفیسر لطیف ...

لاہور(خبر نگار خصوصی)پاکستان کی قومی تاریخ میں حفیظ جالندھری کا کردار ہمیشہ یاد رکھا جائے گا ۔ قومی ترانہ لکھنا اور شاہنامہ اسلام کی تخلیق نے حفیظ جالندھری کو ایسا مقام عطا کر دیا جو کسی اور کو حاصل نہیں ہو سکتا ان خیالات کاا ظہارپروفیسر لطیف نظامی نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان ، شاہراہ قائداعظمؒ لاہور میں ابوالاثر حفیظ جالندھری کے116ویں یوم پیدائش کے موقع پرنئی نسل کو ان کی حیات و خدمات سے آگاہ کرنے کیلئے خصوصی لیکچر کے دوران کیا۔ اس لیکچر کا اہتمام نظریۂ پاکستان ٹرسٹ نے تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے اشتراک سے کیا تھا۔پروفیسر لطیف نظامی نے کہا کہ حفیظ جالندھری مرحوم 14جنوری 1900ء کو پنجاب کے مشہور قصبے جالندھر میں پیدا ہوئے۔ آپ کی شاعرانہ ہی نہیں بلکہ قومی حیثیت بھی محتاجِ تعارف نہیں اور ایک زمانہ اس سے آگاہ ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ وہ پاکستان اور پاکستانی قوم کے محسنین میں ایک نمایاں مقام کے حامل ہیں۔ آپ کی زندگی جہد مسلسل سے عبارت ہے۔ آغاز میں کسب معاش کیلئے ریلوے میں ملازمت اختیار کی اور بعد ازاں چھوٹی موٹی ملازمتیں اختیار کیں۔ ساتھ ہی ساتھ علم و ادب سے اپنی بے پناہ دلچسپی کو بھی برقرار رکھا اور مختلف جرائد اور رسالوں میں لکھتے رہے اور قلیل آمدنی کے باوجود علم و ادب کی خدمت دل و جان سے کرتے رہے۔ چنانچہ اپنی خداداد صلاحیتوں اور ادبی خدمات سے بہت جلد ناموری حاصل کرلی اور نہ صرف ہندوستان بلکہ بین الاقوامی سطح پر بھی شہرت نے ان کے قدم چومے۔ 1947ء میں ڈائریکٹر جنرل مورال آرمڈ سروسز آف پاکستان مقرر ہوئے۔ 1965ء میں محاذِ جنگ پر اگلے مورچوں پر جا کر مجاہدین کا لہو گرماتے رہے۔ ملک و ملت کی بے پناہ خدمت کرنے والی اس شخصیت کی شایانِ شان پذیرائی ہم پاکستانیوں کا فرض ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1