یونین کونسل سے قومی اسمبلی تک کا چناؤ خفیہ رائے شماری کے بغیر غیر آئینی ہے،ولیم جاوید

یونین کونسل سے قومی اسمبلی تک کا چناؤ خفیہ رائے شماری کے بغیر غیر آئینی ...

لاہور(خبر نگار خصوصی)مسیحا ملت پارٹی پنجاب کے صدر ولیم جاوید نے الیکشن کمیشن کی طرف سے پنجاب اور سندھ میں اقلیتوں سمیت مخصوص نشستوں کے لیے نوٹیفیکیشن جاری کرنے کے لیے انتباہ کرنے کے بارے میں خبر پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن کمیشن ایک آئینی ادارہ ہے اور اُسے مکمل طور پر اپنی ذمہ داری کے بارے میں سوچنا چاہیے کہ ملک کے آئین کے مطابق یونین کونسل سے قومی اسمبلی تک کسی نمائندے کا چناؤ خفیہ رائے شماری کے بغیر غیر آئینی ہے کیونکہ آئین ہمیں اِس بات کا پابندکرتا ہے کہ ہم کسی نمائندے کا انتخاب خفیہ رائے شماری کے ذریعے ہی کر سکتے ہیں۔الیکشن کمیشن کو چاہیے کہ وہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو مخصوص نشستوں کے سلیکشن کے ذریعے نامزدگی کی بجائے برائے راست آئین کے تابع رہتے ہوئے اقلیتوں سمیت تمام مخصوص نشستوں کے لیے بھی خُفیہ رائے شماری کے ذریعے ان نمائندوں کے چناؤ کے لیے انتباہ کرے۔

۔ یہ ضروری نہیں کہ اگر سرکار یا ریاست کا کوئی ادارہ غیر آئینی طریقہ سے کسی عمل کو بار بار دُہرارہا ہے تو دوسرا کوئی ادارہ اس کے اِس عمل میں حصے دار بنے یو اُسکے حکم کی بجا آوری کے لیے سرخم کر دے کیونکہ بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کے واضح فر موداد ہے کہ کوئی ادارہ یا اسکا اہلکار کسی شخص کے غیر آئینی حکم نہ مانے بلکہ اسکے خلاف اُٹھ کھڑا ہو لہٰذا مسیحا ملت پارٹی الیکشن کمیشن سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ اپنی آئینی ذمہ داری پوری کرتے ہوئے بلدیاتی الیکشن میں اقلیتوں سمیت دیگر مخصوص نشستوں میں نامزدگی کے طریقہ کو ختم کرنے اور اقلیتوں کو اپنے ووٹ کے ذریعے خُفیہ رائے شماری کے ذریعے اپنے نمائندوں کے انتخاب کا حق دینے کے لیے حکومت کو باضابطہ طور پر مراسلہ تحریر کرے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4