خیبر میڈیکل یونیورسٹی پیشہ ورانہ امور کے ساتھ اخلاقی تعلیم و تربیت پر بھی توجہ دے :شہرام ترگئی

خیبر میڈیکل یونیورسٹی پیشہ ورانہ امور کے ساتھ اخلاقی تعلیم و تربیت پر بھی ...

پشاور(پاکستان نیوز)صوبائی وزیر صحت شہرام خان ترکئی نے خیبرمیڈیکل یونیورسٹی(کے ایم یو)پشاور کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے توقع ظاہرکی ہے کہ کے ایم یو نہ صرف معاشرے کوصحت کے مختلف مسائل کی نشاندہی بلکہ ان کے ممکنہ حل میں بھی صوبائی حکومت کو ہرممکن پیشہ ورانہ تعاون کی فراہمی کا سلسلہ جاری رکھاجائے گا۔ انہوں نے ان خیالات کااظہار کے ایم یو کے دورے کے موقع پر مختلف اداروں کے سربراہان اور فیکلٹی کے ایک خصوصی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیاہے۔ ا س موقع پر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد حفیظ اللہ اوررجسٹرار ڈاکٹر فضل محمودکے علاوہ دیگر شعبوں کے ذمہ داران بھی موجود تھے۔ شہرام خان ترکئی نے کہا کہ صوبے کی واحد میڈیکل یونیورسٹی ہونے کے ناطے کے ایم یو پرطبی تعلیم کے معیار اورکوالٹی کومزید بہتر بنانے کے حوالے سے بھاری ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کے ایم یو نے میڈیکل اورڈینٹل تعلیم کے علاوہ نرسنگ، فزیو تھراپی، پیرامیڈیکس، پبلک ہیلتھ اور بیسک میڈیکل سائنسز کے شعبوں میں اصلاحات اوران شعبوں میں معیاری تعلیم وتحقیق کاجوسلسلہ شروع کررکھاہے اس کے حوصلہ افزاء نتائج برآمد ہونگے۔ شہرام کئی نے کہا کہ کے ایم یو کو طبی عملے کی پیشہ ورانہ مہارتوں میں ا ضافے کے ساتھ ساتھ ان کی اخلاقی تعلیم وتربیت پربھی خصوصی توجہ دینی چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ کلینیکل ٹرینی میڈیکل آفیسرز کی طرزپر کے ایم یوکے بیسک میڈیکل سائنسز کے ایم فل اور پی ایچ ڈی کے زیر تربیت 100سکالرز کے لئے بھی ماہانہ وظیفہ مقرر کیاجائے گا۔انہوں نے کہاکہ یونیورسٹی کی مالی ضروریات کو پیش نظر رکھتے ہوئے کمز اورکڈز کوہاٹ کے لئے100ملین روپے سالانہ گرانٹ ان ایڈ کی فراہمی کو بھی یقینی بنایاجائیگا جبکہ یونیورسٹی کی نوتعمیر شدہ عمارت میں طلباء وطالبات کے لئے انڈور سپورٹس کمپلیکس کے علاوہ زیر زمین جدید کارپارکنگ کی تعمیر کے منصوبوں میں بھی یونیورسٹی کے ساتھ ہرممکن مالی تعاون کیاجائے گا۔قبل ازیں یونیورسٹی کے وائس چانسلرپروفیسر ڈاکٹرمحمد حفیظ اللہ نے یونیورسٹی کی تعلیمی تحقیقی اور ترقیاتی سرگرمیوں کے بارے میں صوبائی وزیر صحت کوتفصیلی بریفنگ دی۔#

مزید : پشاورصفحہ اول