فضائی سفر کی دنیا میں نئی تاریخ رقم ہوگئی، مسافر اس انداز سے جہاز میں سوار ہوگیا جو آج سے پہلے کبھی نہ ہوا تھا

فضائی سفر کی دنیا میں نئی تاریخ رقم ہوگئی، مسافر اس انداز سے جہاز میں سوار ...
فضائی سفر کی دنیا میں نئی تاریخ رقم ہوگئی، مسافر اس انداز سے جہاز میں سوار ہوگیا جو آج سے پہلے کبھی نہ ہوا تھا

  

سٹاک ہوم (نیوز ڈیسک) گزشتہ دو صدیوں کے دوران سائنسی ترقی کی رفتار اس قدر حیرت انگیز رہی ہے کہ دنیا کی شکل ہی بدل گئی ہے، مگر آنے والے دنوں میں کیسے کیسے حیرتناک باب کھلنے والے ہیں اس کی ایک جھلک سویڈن کے ٹیکنالوجی ایکسپریٹ اینڈرئیس سجاسٹرم نے دکھادی ہے۔ اینڈرئیس دنیا کے پہلے شخص بن گئے ہیں کہ جنہوں نے اپنے جسم میں لگائی گئی ایک چپ (chip) کو ائیرپورٹ پر اپنی شناخت اور سیکیورٹی چیکنگ کے لئے استعمال کیا، اور یوں وہ اپنے گھر سے چلے اور سیدھے جا کر جہاز میں بیٹھ گئے ۔

مزید جانئے: تاریخ میں پہلی مرتبہ قطر ائیرویز نے ’ٹریول میلہ‘ متعارف کروادیا، ناقابل یقین آفر

اخبار ’ڈیلی میل‘ کے مطابق اینڈرئیس سٹاک ہوم آرلانڈا ائیرپورٹ سے پیرس کے لئے روزانہ ہوئے۔ سکینڈے نیویئن ائیرلائنز فلائٹ کی بکنگ کا تمام ڈیٹا ایک انتہائی چھوٹی چپ پر اپ لوڈ کیا گیا تھا، جس کی جسامت محض چاول کے ایک دانے کے برابر تھی، اور یہ چپ سرنج کے ذریعے اینڈریئس کے جسم میں منتقل کی گئی تھی۔ جب وہ ائیرپورٹ پر پہنچے تو نہ ہی کوئی شناختی کارڈ اور پاسپورٹ نکالنا پڑا اور نہ ہی دستاویزات کی چیکنگ کے لئے قطار میں کھڑا ہونا پڑا۔وہ سیکیورٹی چیکنگ کی زحمت سے بھی آزاد رہے کیونکہ انہوں نے ہر جگہ پر نصب مشینوں کے سامنے صرف اپنا ہاتھ ہلایا اور گزرتے چلے گئے۔ ان کے بازو میںد اخل کی گئی چپ سے مشینوں نے خود بخود ڈیٹا ریڈ کیا اور ان کی شناخت اور ڈیٹا انٹری کے تمام مراحل خود بخودمکمل ہوتے گئے۔

اینڈرئیس نے ان دلچسپ مناظر کی ویڈیو یوٹیوب پر اپ لوڈ کردی ہے جہاں اسے ہزاروں لاکھوں لوگ دیکھ رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ جب وہ کسی بھی قسم کی شناختی دستاویزات کے بغیر اور سو فیصد بلا تاخیر طیارے پر سوار ہورہے تھے، اور ائیرپورٹ پر نصب مشینیں انہیں صرف ان کے جسم سے ہی شناخت کر رہی تھیں تو ان کی آنکھیں کے سامنے یہ نقشہ گھوم رہا تھا کہ مستقبل کی دنیا کیسی ہوگی، جس میں ہم مادی اشیاءکے بغیر ہی اپنے تمام کام کرسکیں گے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس