امریکی سرمایہ کاروں کی علامہ اقبال انڈسٹریل سٹی میں گہری دلچسپی

      امریکی سرمایہ کاروں کی علامہ اقبال انڈسٹریل سٹی میں گہری دلچسپی

  



لاہور(آن لائن)امریکی بزنس کمیونٹی نے پاکستان میں بہترین مارکیٹ پوٹینشل اور موجودہ حکومت کے بہتر طرز حکمرانی کی بنا پر سی پیک کے تحت فیصل آباد انڈسٹریل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ اینڈ مینجمنٹ کمپنی (فیڈمک) کے ترجیحی خصوصی اقتصادی زون علامہ اقبال انڈسٹریل سٹی میں سرمایہ کاری کے لئے گہری دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ پاکستان امریکن بزنس فورم کے صدر  ریاض حسین کی سربراہی میں امریکی بزنس کمیونٹی کے ایک وفد نے فیڈمک کے چیئرمین میاں کاشف اشفاق سے ملاقات کی اور فیڈمک میں پیش کردہ سرمایہ کاری و کاروبار دوست ماحول سے بھر پور استفادہ کیلئے آمادگی کا اظہار کیا۔ اجلاس کا بنیادی مقصد تجارت اور سرمایہ کاری کیلئے مختلف شعبوں کی نشاندہی اور اس حوالے سے تبادلہ خیالات کرنا تھا۔ میاں کاشف اشفاق نے  وفد کو فیڈمک میں دستیاب سرمایہ کاری کے مواقع اور ترغیبی پیکجز پر بریفنگ دی۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق فیڈمک غیر ملکی اور مقامی مینوفیکچررز کو زیادہ سے زیادہ سہولیات کی فراہمی اور صوبے میں کاروباری آسانیوں کے لئے ایک ہی چھت تلے بزنس بزنس کمیونٹی کو تمام خدمات مہیا کرنے کیلئے پر عزم ہے۔علامہ اقبال  انڈسٹریل سٹی اور ایم تھری کی تمام صنعتوں کو 10 سال کے لئے ٹیکس سے استثنیٰ حاصل ہو گا اور تمام پلانٹس، مشینری، خام مال اور دیگر سازوسامان ڈیوٹی فری درآمد کرنے کی اجازت ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ مختلف منصوبوں میں  تقریباً  400 ارب روپے کی غیر ملکی اور مقامی سرمایہ کاری ہو گی جو سرمایہ کاروں کے موجودہ حکومت پر اعتماد کی بحالی کا مظہر ہے۔ 25 سے زیادہ چینی کمپنیاں اس انڈسٹریل سٹی میں سرمایہ کاری کے لئے معاہدے کر چکی ہیں۔ میاں کاشف اشفاق نے کہا کہ امریکہ نے 2020 کو خوشحالی میں شراکت داری کا سال قرار دیا ہے جس سے بہترین استفادہ کیلئے عوامی سطح پر روابط کا فروغ اور دونوں ممالک کے اداروں کے مابین تعاون انتہائی ضروری ہیتاکہ پاکستان میں امریکی نجی شعبے کی دلچسپی میں اضافہ کیا جا سکے۔ پاکستان امریکن بزنس فورم کے صدر  ریاض حسین  نے فورم کے کلیدی مقاصد پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ یہ ہمارے لئے تعلقات کو استوار اور بہتر کرنے کا شاندار موقع ہے اور دوطرفہ تجارتی تعلقات کے مثبت اعدادوشمار اس کی بھرپور عکاسی کر رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ 2018 کے مقابلے میں 2019 میں امریکہ کو پاکستانی برآمدات میں 6 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے جبکہ 2018 میں دوطرفہ تجارت 6.6 بلین ڈالر تھی۔ انہوں نے پاکستانی مصنوعات کے ٹیرف میں نرمی پر زور دیتے ہوئے کہا کہ امن و امان کی بحالی اور منی لانڈرنگ کی روک تھام کے موثر اقدامات کے بعد پاکستان کا کاروباری ماحول بہت بہتر ہو گیا ہے-

 اور امریکی کمپنیوں کے لئے زراعت، لائیو سٹاک، فوڈ پروسیسنگ اور سمندری غذا کے شعبوں میں وسیع امکانات موجود ہیں۔

 وفد نے علامہ اقبال انڈسٹریل سٹی اور ایم تھری منصوبے کی تیز رفتار ڈویلپمنٹ پر اطمینان کا اظہار کیا۔

مزید : کامرس