چیف جسٹس مامون رشید نے نئے ایلوکیشن آف ایڈمنسٹر یٹو بزنس کی منظوری دیدی

      چیف جسٹس مامون رشید نے نئے ایلوکیشن آف ایڈمنسٹر یٹو بزنس کی منظوری دیدی

  



لاہور (نامہ نگار خصوصی) چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس مامون رشید شیخ نے عدالت عالیہ کے انتظامی امور چلانے اور ماتحت عدالتوں کی نگرانی کیلئے جسٹس صاحبان کو مختلف اختیارات تفویض کر دیئے،اس سلسلے میں انہوں نے نئے ایلو کیشن آف ایڈمنسٹریٹو بزنس کی منظوری دیدی ہے۔ چیف جسٹس نے عدالت عالیہ کے ججوں پرمشتمل مختلف کمیٹیوں کی تشکیل نو اور مختلف یونیورسٹیوں کے سینڈ یکیٹس کے جوڈیشل ممبران کے ناموں کی بھی منظوری دیدی۔پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کا نیا بورڈ آف مینجمنٹ بھی تشکیل دیدیا گیا ہے،چیف جسٹس مامون رشید شیخ پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کے بورڈ آف مینجمنٹ کے چیئرمین ہوں گے۔عدالت عالیہ کی انتظامی کمیٹی چیف جسٹس سمیت ہائیکورٹ کے سات سینئرترین ججوں پر مشتمل ہوگی۔چیف جسٹس تمام ضلعی عدلیہ کے نگران ہونگے، ان کے علاوہ پنجاب کے ہر ضلع کیلئے الگ نگران جج ہو گا،جیسا کہ جسٹس قاسم خان لاہور،جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی فیصل آباد،جسٹس محمد امیر بھٹی راولپنڈی اور جسٹس شجاعت علی خان ملتان کی ضلعی عدالتوں کی نگرانی کریں گے۔چیف جسٹس نے امتحانی کمیٹی، پروموشن کمیٹی اوررولز کمیٹی سمیت 29مختلف کمیٹیوں کی بھی تشکیل نو کردی جبکہ جوڈیشل افسروں کی ملازمتوں سے متعلق مقدمات کی سماعت کیلئے نیا سروس ٹربیونل اور عدالت عالیہ کے ملازمین کی سروس اپیلوں کی سماعت کے خصوصی بنچ بھی تشکیل دیدیا گیا ہے۔عدالت عالیہ کے 20ججوں کو مختلف یونیورسٹیوں کے سینڈیکیٹس کے جوڈیشل ممبران مقرر کرنے کی منظوری دی گئی ہے ان میں سے جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی،جسٹس قاسم خان یونیورسٹی آف ایجوکیشن لاہور،جسٹس شاہد وحید پنجاب یونیورسٹی لاہور اور جسٹس شجاعت علی خان گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور کے سینڈیکیٹس کے جوڈیشل ممبر ہوں گے۔

لاہور ہائیکورٹ

مزید : صفحہ اول


loading...