جب خصوصی عدالت ہی غیر آئینی تو سزاء کیسی

جب خصوصی عدالت ہی غیر آئینی تو سزاء کیسی

  



ممتاز قانون دان آفتاب باجوہ ایڈووکیٹ نے کہا کہ جس عدالت نے پرویز مشرف کو پھانسی کی سزا دی جب اس خصوصی عدالت کا وجود ہی غیر آئینی و غیر قانونی قرار پایا تو پھر سزا کی کیا قانونی حیثیت رہ جاتی ہے، جس جج نے اپنے فیصلے میں یہ لکھا کہ پرویز مشرف کے جسم سے جب روح پرواز کر جائے تواس کی نعش ڈی چوک میں لٹکائی جائے وہ جج 297پی پی سی 511سات سو ستاسی کی خلاف ورزی کے مرتکب ہوئے ہیں ان کیخلاف مقدمہ درج ہونا چاہئے وہ ایشو آف دی ڈے میں گفتگو کررہے تھے۔انہوں نے کہا خصوصی عدالت کا پرویز مشرف کیخلاف ٹرائل غیر قانونی تھا۔ سوال پیدا ہوتا ہے اس ٹرائل کی روح سے اس وقت کے وزیر قانون زاہد حامد،وزیراعظم شوکت عزیز تمام گورنرز جنہوں نے عملدرآمد کروایا وہ ملزم تھے، انہیں کیوں نہ ٹرائل کا حصہ بنایا گیا،یہ ٹرائل ہی بد نیتی پر مبنی تھا۔

آفتاب باجوہ

مزید : صفحہ اول


loading...