بہاولپور:ذخیرہ اندوزوں کی من مانیا،آئل، گھی،آٹا مہنگا، انتظامیہ غائب

  بہاولپور:ذخیرہ اندوزوں کی من مانیا،آئل، گھی،آٹا مہنگا، انتظامیہ غائب

  



بہاول پور(بیورورپورٹ) بہاول پورکوذخیرہ اندوزوں نے یرغمال بنالیا‘مصنوعی قلت پیداکرکے ایک ماہ میں گھی‘آئل آٹے کی قیمتوں میں ہوش رباء اضافہ کردیا غلہ منڈی میں گندم 2000 روپے فی من ہوگئی‘ آٹے کی قیمت میں ایک ماہ کے دوران100 روپے سے 120 روپے جبکہ(بقیہ نمبر34صفحہ12پر)

گھی اورآئل کی قیمت میں 30 سے 40 روپے اضاہ کردیاگیا شہریوں نے میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے بتایا کہ بہاول پور کو عملی طورپر ذخیرہ اندوزں کے حوالہ کردیاگیاہے کوئی حکومتی رٹ کہیں نظرنہیں آرہی ہے جس دکاندارکادل چاہتاہے وہ قیمتوں میں اضافہ کردیتاہے اوراس کوکوئی پوچھنے والا نہیں ہے شہریوں نے بتایا کہ گذشتہ ایک ماہ کے دوران آٹے کی بوری 700 روپے سے بڑھ کر 810 روپے کردی گئی جبکہ دوسری جانب مقامی گھی کی قیمت 210 روپے اچھے برانڈ کاگھی 230 روپے اسی طرح مقامی آئل کی قیمت 220 اوراچھے برانڈ کاتیل 240 روپے میں فروخت کیاجارہاہے اوران کی قیمتوں میں آئے روز اضافہ دیکھنے میں آرہاہے شہریوں نے کمشنر بہاول پور‘ڈی سی بہاول پور سے فوری نوٹس لینے اور ذخیرہ اندوزوں اور مصنوعی مہنگائی کرنے والے کریانہ سٹورمالکان کے خلاف سخت قانونی کاروائی کرنے اورخودساختہ مہنگائی کوکنٹرول کرنے کامطالبہ کیاہے۔

انتظامیہ

مزید : ملتان صفحہ آخر