ایم کیو ایم کو کسی اور وزارت کیلئے سمجھوتہ نہیں کرنا چاہیے، مرتضی وہاب

  ایم کیو ایم کو کسی اور وزارت کیلئے سمجھوتہ نہیں کرنا چاہیے، مرتضی وہاب

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)ترجمان حکومت سندھ بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا ہے کہ متحدہ قومی موومنٹ(ایم کیو ایم) پاکستان کو اپنے فیصلے پر اصولی اعتبار سے کھڑے رہنا چاہیے اور کسی اور وزارت کیلئے سمجھوتہ نہیں کرنا چاہیے۔کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مرتضی وہاب نے کہا کہ پیپلزپارٹی کی جانب سے ایم کیو ایم کو دی گئی پیشکش آج بھی موجود ہے۔انہوں نے کہا کہ ہماری پیشکش سندھ حکومت کے لیے نہیں تھی بلکہ سندھ کے عوام کے مسائل سے متعلق موثر طریقے سے وفاق کے سامنے لڑنے کے لیے کی تھی۔مرتضی وہاب نے کہا کہ ہماری پیشکش ایک ناکام، نکمی حکومت کو بے نقاب کرنے اور جعلی مینڈیٹ کے ساتھ قائم اتحادی حکومت اسے ختم کرنے کے لیے تھی۔مشیر اطلاعات سندھ نے کہا کہ یہ بلاول بھٹو زرداری کا وژن ہے کہ جو بات انہوں نے کچھ ہفتے پہلے کی تھی یہ اس کا نتیجہ ہے کہ متحدہ قومی موومنٹ نے یہ فیصلہ کیا۔انہوں نے کہا کہ میں گزارش کرنا چاہتا ہوں کہ ایم کیو ایم کو اپنے اس فیصلے پر اصولی اعتبار سے کھڑے رہنا چاہیے اور انہیں کراچی کے عوام کے ساتھ کھڑے رہنا چاہیے۔مرتضی وہاب نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے پاکستان تحریک انصاف نے کراچی والوں سے بہت وعدے کیے، 162 روپے کے ترقیاتی فنڈ سے متعلق بات کی لیکن ایک وعدہ بھی وفا نہیں کیا چاہے وہ ترقیاتی پیکیج ہو، کے ایم سی، حیدرآباد یا مٹھی کے اسپتال کی فنڈنگ ہو۔مشیر اطلاعات سندھ نے کہا کہ وفاقی حکومت نے ایک بھی وعدہ وفا نہیں کیا اس لیے میں ایم کیو ایم مودبانہ گزارش کروں گا کہ خدارا کراچی کا مقدمہ پرزور طریقے سے لڑیں اور کسی اور وزارت کے لیے سمجھوتہ نہیں کیجیے گا۔انہوں نے کہا کہ اگر ہم سب مل کر کراچی والوں کا مقدمہ لڑیں گے تو وفاقی حکومت کو 162 ارب روپے ترقیاتی پیکیج کے لیے منتقل کرنے ہوں گے۔ایک سوال کے جواب میں مرتضی وہاب نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے گلشن اقبال سے الیکشن لڑا وہاں جو وعدے کیے وہ پورے کیے؟ میں گزارش کرتا ہوں کہ یا تو وعدہ کریں نہیں اگر کریں تو انہیں وفا کریں۔

مزید : صفحہ اول


loading...