پنجاب:جنگلی حیات، پالتو جانوروں کی افزائش کیلئے بڑا منصوبہ تیار

  پنجاب:جنگلی حیات، پالتو جانوروں کی افزائش کیلئے بڑا منصوبہ تیار

  



رحیم یارخان(بیورورپورٹ)پنجاب حکومت نے صوبہ بھر میں جنگلی حیات اور پالتو جانوروں،پرندوں کی افزائش کے لیے ایک بڑا پراجیکٹ تیار کر لیا ہے۔جنگلی حیات اور پالتو جانوروں،پرندوں کی افزائش کیلیے پراجیکٹ کے تحت پنجاب بھر میں نجی شعبہ،گروپوں اور انفرادی طور پر جو لوگ پرندوں،پالتو جانوروں،جنگلی حیات کے فروغ اورافزائش کے لیے کام کر رہے ہیں، انھیں سہولیات فراہم کی(بقیہ نمبر33صفحہ7پر)

جائیں گی،ان کی باقاعدہ کیٹگریز بنائی جائیں گی اوراس کے مطابق انھیں سرکاری طور پر ٹیکنیکل امداد،آسان قرضے،ڈاکٹرز کی فری سہولیات بھی فراہم کی جائیں گی۔اس پراجیکٹ کے تحت حکومت نے پنجاب کے تمام 36اضلاع کے ضلعی وائلڈ لائف افسران سے اضلاع میں ایسے بنائے گئے جنگلی فارمز ہاوسز کی فہرست مانگ لی ہے، یہ بھی کہا ہے کہ کون کن کن جانوروں، پرندوں کی افزائش کر رہا ہے؟، تمام گروپوں انفرادی شخصیات کو سٹیم لائن کیا جائے گا،ان سب کی اے بی سی اور ڈی باقاعدہ کیٹگریز بنا کر انہیں سہولیات دی جائیں گی۔پنجاب وائلڈ لائف ڈیپارٹمنٹ نے صوبے بھر میں جانوروں اور پرندوں کے غیر قانونی بریڈنگ فارمز کے خلاف کارروائیاں شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔محکمہ جنگلی حیات پنجاب نے صوبے بھر میں وائلڈ لائف بریڈنگ فارمز اور وہاں موجود جانوروں اور پرندوں کی تفصیلات جمع کرنا شروع کردی ہیں۔ اس کارروائی کے دوران بغیر لائسنس بنائے گئے بریڈنگ فارمز بند اور وہاں موجود جانوراور پرندے محکمے کی تحویل میں لے لئے جائیں گے۔پنجاب وائلڈ لائف ذرائع کے مطابق صوبے میں غیرقانونی بریڈنگ فارمز بہت کم ہوں گے اس کی بڑی وجہ یہ ہے کہ بریڈنگ فارمز کی فیس صرف 10 ہزار روپے ہے۔ بریڈنگ فارم کے لائسنس کے ساتھ ہی فارمرکو ان کی خریدوفروخت کی بھی اجازت مل جاتی ہے۔ تاہم ایسے بریڈنگ سینٹرز کی تعداد کافی ہے جہاں جانور اور پرندے رکھنے کے حوالے سے قواعد و ضوابط کو مدنظر نہیں رکھا گیا ہے اور جنگلی حیات کو وہ سہولتیں نہیں دی جارہی ہیں جن کی ضرورت ہے۔ اس کے علاوہ کئی وائلڈ لائف بریڈنگ سینٹرز ایسے بھی ہیں جنہوں نے لائسنس لے رکھا ہے تاہم وہاں غیرقانونی طور پر ایسے جانور اور پرندے رکھے گئے ہیں جن کے لئے خصوصی اجازت نامے کی ضرورت ہوتی ہے۔

تیار

مزید : ملتان صفحہ آخر