بجٹ کی عدم فراہمی، سرکاری ہسپتالوں میں تنخواہوں کا بحران، صورتحال سنگین

  بجٹ کی عدم فراہمی، سرکاری ہسپتالوں میں تنخواہوں کا بحران، صورتحال سنگین

  



ملتان ( وقا ئع نگار) جنوبی پنجاب کا سب بڑے ہسپتالوں میں بجٹ کی عدم فراہمی کے باعث تنخواہوں کا بحران بڑھ گیا،نشتر ہسپتال تنخواہوں کا بحران سر اٹھانے لگے،نشتر ہسپتال کے 24 پوسٹ گریجویٹ ڈاکٹرز 8 ماہ سے تنخواہ سے محروم ہیں تفصیل کے مطابق تبدیلی سرکار کے وعدوں کے برعکس جنوبی پنجاب کی علاج گاہوں کو محدود بجٹ جاری ہونے کی وجہ سے بیشتر سرکاری ہسپتالوں کے انتظامی اور (بقیہ نمبر34صفحہ7پر)

مالی امور بری طرح متاثر ہو چکے ہیں جس کا براہ راست اثر مریضوں پر پڑ رہا ہے، قسط وار بجٹ جاری ہونے کے باعث نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال انتظامیہ ہسپتال کے 24 پی جی آر ڈاکٹرز گزشتہ آٹھ ماہ کی تنخواہوں سے تاحال محروم ہیں اسی حوالے سے پی ایم اے ملتان کے صدر پروفیسر ڈاکٹر مسعود الروف ہراج کا کہنا تھا کہ نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال کے پوسٹ گریجویٹ ڈاکٹرز کئی ماہ کی تنخواہوں سے محروم ہیں انکی تنخواہ جاری نہ کرنا بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے،نشتر میڈیکل یونیورسٹی اور برن یونٹ میں فیکلٹی کی شدید کمی ہیگزشتہ ایک سال سے اس مسئلے کو پی ایم اے ہر فورم پر اٹھا چکی ہے لیکن دو مرتبہ انٹرویو کینسل ہوئے تاہم یونیورسٹی انتظامیہ کی سستی اور عدم دلچسپی کی وجہ سے تاحال خالی سیٹوں پر بھرتی نہیں ہو سکی،ادھر 500 بستروں پر مشتمل چلڈرن کمپلیکس کو 300 بستروں کے حساب سے بجٹ جاری کیا جارہا ہے جس کے باعث جان بچانے والی ادویات سمیت موسمی بیماریوں کے خلاف آزمودہ انجکشن تک ختم ہو چکے ہیں جو کہ محکمہ صحت پنجاب کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہیں,سنڈیکیٹ ممبران سے مطالبہ ہے کہ فیکلٹی کی کمی پوری کرنے کیلئے فوری واک ان انٹرویوز کئے جائیں جبکہ پی جی آرز کی تنخواہوں کے لئے بجٹ جاری کیا جائیاس حوالے سے پی ایم اے ملتان مطالبہ کرتی ہے کہ سنڈیکیٹ کی میٹنگ میں ان مسائل کو فوری حل کیا جائے گا بصورت دیگر بھرپور احتجاج ہو گا۔

بحران

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...