اغوا،بداخلاقی کیس، ملزموں کی درخواست ضمانت پرفیصلہ محفوظ

  اغوا،بداخلاقی کیس، ملزموں کی درخواست ضمانت پرفیصلہ محفوظ

  



ملتان ( خبر نگار خصو صی) ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج جسٹس سردار احمد نعیم نے اغوا اور بداخلاقی کے مقدمہ میں ملوث ملزمان کی درخواست ضمانت پر فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔ فاضل عدالت نے کہا کہ کس قدر افسوسناک بات ہے کہ کسی کی بہن بیٹی کا جعلی نکاح نامہ تیار کیا جائے تاکہ ملزمان کو بچایا جا سکے۔ استغاثہ (بقیہ نمبر53صفحہ12پر)

کے وکیل نے بتایا کہ (الف) کو صداقت اور ریاض وغیرہ نے پل ڈاٹ والی ڈیرہ غازی خان سے اغوا کیا اور اس کے ساتھ ایک ماہ تک بد اخلاقی کرتے رہے ملزمان نے اپنی ضمانت کرانے کے لیے جعلی نکاح نامہ پیش کیا اور ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کرلی عدالت کو جب جعلی دستاویزات بارے علم ہوا تو ملزمان کے خلاف فراڈ کا مقدمہ 8 اپریل کو درج کیا گیا ملزمان کی پہلی عبوری ضمانت عدم پیروی پر خارج ہو گئی تھی۔تاہم نکاح خواں اور گواہوں نے نکاح نامہ کے حوالے سے لاعلمی کا اظہار کیا اور ایک گواہ نصراللہ نے کہا کہ اسے نکاح کے بارے میں پتہ نہیں ہے۔ ملزمان کے وکیل نے موقف اختیار کیا تھا کہ صداقت کی ضمانت قبل ازگرفتاری ہوچکی ہے اس کے علاوہ ملزم ریاض، اس کے والد فدا حسین اور بھائی فیاض کو پولیس نے گرفتار کر لیا تھا اور خود ریاض بھی پولیس کی تحویل میں رہا ہے اس لئے اس کی ضمانت منظور کی جائے دو طرفہ دلائل کی سماعت کے بعد فاضل عدالت نے فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔

فیصلہ محفوظ

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...