کھلی کچہری کے انعقاد سے مسائل کی نشاندہی ہوتی ہے، ڈی پی او ڈیرہ

کھلی کچہری کے انعقاد سے مسائل کی نشاندہی ہوتی ہے، ڈی پی او ڈیرہ

  



ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ) ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کیپٹن(ر) حافظ واحد محمود نے کہا ہے کہ کھلی کچہری کے انعقاد سے ناصرف لوگوں کے پولیس کے حوالے سے درپیش مسائل حل اور بعض دیگر مسائل کے حوالے سے مثبت تجاویز سامنے آتی ہیں، انسپکٹر جنرل پولیس خیبر پختونخوا کے ویژن کے مطابق عوام اور پولیس میں رابطے بڑھانے کیلئے کھلی کچہریوں کا انعقاد اسی سلسلے کی کڑی ہے، پولیس عوام کے ساتھ اچھا برتاؤ کریگی، پولیس میں موجود کالی بھیڑوں کیخلاف شکنجہ کسا جاچکا ہے، تھانوں میں ٹاؤں کا داخلہ بند کردیا ہے،”مہذب شہری، منظم ٹریفک“ مہم کا مقصد ٹریفک کے نظام میں بہتری لانا ہے، ٹریفک کے نظام کی بہتری شہریوں کے تعاون کے بغیر ناممکن ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضلعی اسمبلی حال ڈیرہ اسماعیل خان میں منعقدہ کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ کھلی کچہری میں ڈی ایس پی سٹی محمد اقبال بلوچ، انجمن تاجران شرقی سرکلر روڈ کے صدر چوہدری جمیل احمد، جنرل سیکرٹری حاجی محمد رمضان، مرکزی تاجر اتحاد کے صدر حامد علی رحمانی، خالد ناز، دلشاد بیگم، ذیشان راج سمیت بڑی تعداد میں تاجروں، شہریوں اور معززین علاقہ نے شرکت کی۔ کھلی کچہری میں شہریوں نے پولیس سے متعلق اپنی شکایات کھل کر بیان کیں، ان شکایات پر ڈی پی او ڈیرہ نے فوری ایکشن لیتے ہوئے شکایات کے ازالے کے احکامات جاری کئے۔ انہوں نے ٹریفک چوکی کی عمارت کی خستہ حالی کے حوالے سے فوری طور پر عمارت کو کسی مناسب اور نئی بلڈنگ میں منتقل کرنے کے احکامات جاری کئے۔ اس موقع پر شہریوں نے ڈی پی او ڈیرہ کی جانب سے ”مہذب شہری،منظم ٹریفک“ مہم کے آغاز اور ٹریفک وارڈنز کو خوبصورت ودریوں کی فراہمی سمیت مختصر عرصے میں انقلابی اقدامات کرنے پر خراج تحسین پیش کیا اور پولیس کو اپنے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کیپٹن(ر) حافظ واحد محمود نے کہا کہ انسپکٹر جنرل پولیس خیبر پختونخوا کی طرف سے عوام اور پولیس میں رابطے استوار کرنے کے حکم سے یقیناً اس اقدام سے امن و امان کی صورتحال بہتر ہوگی، ٹریفک کے اژدھام کو کنٹرول کرنے کیلئے عنقریب عمائدین سے ملاقاتوں کا سلسلہ شروع کیا جائے گا، اب کسی بھی مسجد میں اعلان ہوگا اور اس کے بعد ڈی پی او متعلقہ تھانے میں بیٹھ کر عوام کے مسائل ان کی دہلیز پر ہی سنے اور حل کرے گا، مختلف تھانہ جات میں عوامی شکایات پر پولیس سٹاف کو تبدیل کردیا گیا ہے اور ان کی جگہ بااخلاق سٹاف تعینات کیا گیا ہے۔ تھانوں سے ٹاؤٹ ازم کا خاتمہ کردیا گیا ہے اور ان کا تھانوں میں داخلہ بند ہوچکا ہے۔ شہر میں ٹریفک کے مسائل کے حل کیلئے ڈیرہ اسماعیل خان کے علاوہ دیگر اضلاع سے تعلق رکھنے والے چنگ چی رکشاؤں کا سات روز میں داخلہ بند کردیا جائے گا اور انہیں ضلع چھوڑنے پر مجبور کیا جائے گا اور آئندہ تین سے چار ایام کے اندر 3/3، 4/4 رکشے رکھنے والے مالکان کیخلاف بھی ایم پی او کے تحت مقدمات درج کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ڈیرہ پولیس نے میرے صرف40دن کے مدت ملازمت کے دوران اب تک ایک موٹر سائیکل چور گروہ، ایک موبائل چھینے والے گروپ سمیت راہزنی میں ملوث گروہ کو بھی بے نقاب کرتے ہوئے گرفتار کیا ہے۔۔ ڈی پی او ڈیرہ کیپٹن(ر) حافظ واحد محمود نے کہا کہ ضلعہ ڈیرہ کی پولیس نے سود خوروں اور منشیات فروشوں کیخلاف کریک ڈاؤن شروع کر رکھا ہے، اب تک20سود خوروں اور منشیات فروشوں کیخلاف کاروائی کرکے ان کو پابند سلاسل کیا گیا ہے۔ سود خوروں اور منشیات فروشوں کیخلاف پولیس نے سابقہ ریکارڈ کی بنیاد پر334بدنام زمانہ افراد کی فہرست تیار کی ہے جن کیخلاف سخت کاروائی کی جارہی ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر