خودکشی کرنے والا انسان دوست پولیس افسر جس نے اپنے گائوں کا حلیہ بدل دیا

خودکشی کرنے والا انسان دوست پولیس افسر جس نے اپنے گائوں کا حلیہ بدل دیا
خودکشی کرنے والا انسان دوست پولیس افسر جس نے اپنے گائوں کا حلیہ بدل دیا

  



راولپنڈی(ویب ڈیسک) پولیس ٹریننگ سکول روات کے پرنسپل ابرار حسین نیکوکارہ کی مبینہ خودکشی پر انہیں جاننے والے حیران ہیں، مرحوم ایک درد مند دل رکھنے والے اور اپنے گائوں اور لوگوں سے محبت کرنے والے انسان تھے۔گزشتہ روز مبینہ طور پر خود کشی کرنے والے سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس (ایس ایس پی) ابرارحسین نیکوکارہ کا تعلق چنیوٹ کے چھوٹے سے گائوں ٹھٹھہ کرم شاہ سے تھا۔

جیو نیوز کے مطابق ابرار حسین اپنے گائوں کے واحد ایم اے پاس نوجوان تھے، ایم اے کرنے کے بعد انہوں نے سینٹرل سپیریئر سروس (سی ایس ایس) کا امتحان پاس کیا اور پولیس سروس جوائن کرلی۔ایس ایس پی ابرارحسین کو اپنے گائوں سے بہت زیادہ محبت تھی اس لیے آفیسر بننے کے بعدانہوں نے اپنے گائوں کی حالت بدلنے کی ٹھان لی۔ چنیوٹ کے دور دراز چھوٹے سے گائوں ٹھٹھہ کرم شاہ کی دیواروں پر موجود خوبصورت پینٹنگز، گائوں کا سوئمنگ پول اور گلیوں کے اطراف لگے درخت ان کی اپنے آبائی علاقے سے محبت کا ثبوت ہیں۔

ابرار حسین نیکوکارہ نےگائوں والوں کوصاف پانی سے سبزیاں اگانےکی ترغیب بھی دی اور ایک گرائونڈ میں فٹ بال کے پول لگوا ئے تاکہ نوجوان فٹ بال کھیل کر منفی سرگرمیوں سے دور رہیں، وہ روایتی میوزک سے بھی خاص لگائو رکھتے تھے۔ٹھٹھہ کرم شاہ کے رہائشیوں کا کہنا ہے کہ جس طرح ایس ایس پی ابرارنیکوکارہ نے اپنے گائوں سے محبت کااظہارکیا، اگراعلیٰ مقام حاصل کرنے والے سبھی لوگ یہ سوچ اپنالیں تو ملک وقوم کی حالت بدل جائے۔ایس ایس پی ابرارحسین نے اپنےگائوں کے لیے کئی ایسے کام کیے،جن سے اس کی حالت بدل گئی،زندگی سے پیار کرنے والے ابرار نیکوکارہ نہ جانےکن مشکلات کا شکار ہوئے کہ اپنی زندگی کا ہی خاتمہ ہی کرلیا۔

واضح رہے کہ راولپنڈی کے قریب واقع پولیس ٹریننگ سکول روات کے پرنسپل میاں ابرار حسین نیکوکارہ نے گذشتہ روز مبینہ طورپر اپنے کمرے میں خودکوگولی مار کرخودکشی کرلی تھی۔وہ پولیس ٹریننگ سکول کے احاطہ میں واقع سرکاری رہائشگاہ میں بیوی اور دو بچوں کے ہمراہ رہائش پذیر تھے۔ذرائع کے مطابق ایس ایس پی ابرار حسین ڈپریشن کا شکار اور ماہر نفسیات کے زیر علاج بھی تھے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /راولپنڈی