ایم کیو ایم پاکستان کی ساکھ نچلی ترین سطح پر پہنچ گئی،ازالہ صرف وزارت کے استعفیٰ سے نہیں ہو گا:ڈاکٹر فاروق ستار

ایم کیو ایم پاکستان کی ساکھ نچلی ترین سطح پر پہنچ گئی،ازالہ صرف وزارت کے ...
ایم کیو ایم پاکستان کی ساکھ نچلی ترین سطح پر پہنچ گئی،ازالہ صرف وزارت کے استعفیٰ سے نہیں ہو گا:ڈاکٹر فاروق ستار

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن) سربراہ تنظیم (ایم کیو ایم پاکستان) بحالی کمیٹی ڈاکٹر فاروق ستار کی سربراہی میں بدھ کو او آر سی کا ہنگامی اجلاس پی آئی بی کالونی میں منعقد ہوا ۔ اجلاس میں اراکین او آر سی نے حکومت کی مجموعی کارکردگی پر مایوسی کا اظہار کیا اور ایم کیو ایم پاکستان کے سیاسی کردار کو عوام کیلئے انتہائی غیر سنجیدہ اور افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی کے وزارت قبول کرنے اور اس طرح کے دیگر غلط فیصلوں کی وجہ سے آج ایم کیو ایم پاکستان کی یہ موجودہ صورتحال ہے جسکے ذمہ دار اس طرح کے غلط فیصلے ہیں۔

  اراکین کا کہنا تھا کہ اس صورتحال پر ایم کیو ایم پاکستان کی سیاسی بصیرت پر کئی سوال اٹھتے ہیں، جبکہ بنیادی رکن ڈاکٹر فاروق ستار کے منع کرنے کے باوجود حکومت میں جانا اور وزارتیں لینے کا فیصلہ سیاسی بصیرت سے مکمل عاری تھا ۔ ایم کیو ایم پاکستان کی ساکھ نچلی ترین سطح پر پہنچ گئی ہے اب اسکا ازالہ صرف وزارت کے استعفیٰ  سے نہیں ہو گا، کفارے کیلئے اب ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی کو ایم کیو ایم پاکستان کی سربراہی سے بھی استعفیٰ دینا ہو گا ۔ کارکنان کے ذہنوں میں پارٹی کے اصول و ضوابط کو لے کر سوالات پیدا ہو رہے ہیں۔ فروغ نسیم اگر پارٹی ٹکٹ پر منتخب ہوئے تھے تو پھر وہ کیسے دوسری پارٹی کے وزیر ہیں؟  فروغ نسیم کی وزارت پارٹی اصولوں کے منافی ہیں۔ پارٹی قیادت سے مایوس کارکنان کی آراء کا خیال رکھتے ہوئے رابطہ کمیٹی فیصلہ کرے اور فروغ نسیم کو وزارت چھوڑنے یا سینیٹر کے عہدے سے فی الفور استعفیٰ کا حکم دے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی