جنوبی پنجاب: بجٹ میں  3ارب روپے کا اضافہ منصوبوں پرکام تیز کرنیکا فیصلہ 

جنوبی پنجاب: بجٹ میں  3ارب روپے کا اضافہ منصوبوں پرکام تیز کرنیکا فیصلہ 

  

 ملتان (سپیشل  رپورٹر)جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کی بحالی کے حوالے سے ایک اور اہم پیشرفت سامنے آئی ہے، ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساوتھ پنجاب اور سیکرٹریز نے  ویڈیو لنک کے ذریعے چیف سیکرٹری پنجاب کے زیر صدارت لاہور میں منعقد ہونے والے اجلاس میں شرکت کی۔چیف سیکرٹری پنجاب کامران علی افضل نے بالائی پنجاب اور جنوبی پنجاب کے ایڈمنسٹریٹیو سیکرٹریز  سے خطاب (بقیہ نمبر23صفحہ6پر)

کیا اور گزشتہ چھ ماہ کے دوران ترقیاتی منصوبوں پر پیش رفت اور فنڈز کے استعمال بارے جائزہ لیا گیا۔جائزے کے مطابق جنوبی پنجاب ترقیاتی منصوبوں کی رفتار میں بالائی پنجاب سے آگے ہے۔جنوبی پنجاب میں ترقیاتی منصوبوں پر جاری کئے گئے فنڈ کا 47 فیصد جبکہ بالائی پنجاب میں 46 فیصد خرچ کیا گیا ہے۔اسی طرح جنوبی پنجاب کے ترقیاتی منصوبوں کے لئے 42 فیصد جبکہ بالائی پنجاب کے لئے 40 فنڈز جاری کئے ہیں۔ترقیاتی منصوبوں کے لئے فنڈز مختص کرنے کے حوالے سے بھی جنوبی پنجاب آگے ہے۔اب تک جنوبی پنجاب کے منصوبوں کے لئے 38 فیصد جبکہ بالائی پنجاب کے منصوبوں کے32فیصد فنڈز مختص کئے گئے ہیں۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساوتھ پنجاب کیپٹن ر ثاقب ظفر نے چیف سیکرٹری پنجاب کو ویڈیو لنک کے ذریعے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ جنوبی پنجاب کا بجٹ189ارب روپے سے بڑھا کر192 ارب روپے کردیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ پی اینڈ ڈی کی طرف سے ترقیاتی منصوبوں کے لئے 142 ارب روپے جاری کئے جا چکے ہیں۔کیپٹن ر ثاقب ظفر نے بتایا کہ جنوبی پنجاب کے11 اضلاع میں 2853 منصوبوں پر کام جاری ہے۔ان منصوبوں میں صحت کے شعبے کے 215،تعلیم کے210،سڑکوں کے631، بلڈنگز161،زراعت25 اور لوکل گورنمنٹ کے 429 منصوبے  شامل ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ تمام محکموں کوآئندہ چھ ماہ میں منصوبے مکمل کرنے کا ٹاسک دیا گیا ہے اور سو فیصد فنڈز کے اجرا کے حامل عوامی مفاد کے منصوبوں کو ترجیحا" مکمل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساوتھ پنجاب نے بتایا کہ منصوبوں پر کام کی کوالٹی اور شفافیت یقینی بنانے اور تمام ایڈمنسٹریٹیو سیکرٹریز کو ترقیاتی منصوبوں پر پیش رفت بارے ہفتہ وار اجلاس منعقد کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -