بلدیاتی اداروں کیلئے قانون سازی نہ کرکے آئین کا مذاق اڑایا جارہا ہے: لاہورہا ئیکورٹ 

بلدیاتی اداروں کیلئے قانون سازی نہ کرکے آئین کا مذاق اڑایا جارہا ہے: ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے قراردیاہے کہ بلدیاتی نمائندوں کو ترقیاتی منصوبوں سے متعلق فنڈز کی فراہمی کے لئے دائر درخواست پر  بلدیاتی اداروں کیلئے قانون سازی نہ کرکے آئین کا مذاق اڑایا جارہاہے، اہم سوال ہے کہ آرڈیننس تین ماہ میں ختم ہوجائیگا تو پھر کیا ہوگا، پھر پرانا قانون بحال ہوجائیگا کیا پھر آرڈیننس جاری ہوگا، چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹرجسٹس محمد امیربھٹی پر مشتمل ڈویژن بنچ نے مذکورہ ربالاریمارکس کے ساتھ فریقین کو مزید دلائل کے لئے 26 جنوری کو طلب کرلیا درخواست گزار کے وکیل عمران رضا چدھڑ عدالت میں پیش ہوئے،دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ بلدیاتی نمائندوں کی مقررہ مدت ختم ہوگئی ہے اب کیا ہوسکتا ہے، بادی النظر میں آپ کی درخواست زائد المعیاد ہوچکی، آپ اس بات کو ذہن میں رکھ کر دلائل دیں، اب بلدیاتی نمائندوں کی بجائے ترقیاتی منصوبوں کیلئے فنڈز ایڈمنسٹریٹر کو ملیں گے، درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد حکومت نے جو کیا وہ اب وہی کرے گی، فاضل بنچ نے کہا کہ پنجاب حکومت بلدیاتی انتخابات میں تاخیر کیوں کررہی ہے، سرکاری وکیل نے کہا کہ حلقہ بندیوں کے لیے انتظامات کیے جا رہے ہیں، حلقہ بندیوں کے لیے کمیٹیاں بنا دی گئی ہیں شیڈول بعد میں جاری ہوگا، بارہ دسمبر کو نیا آرڈیننس جاری ہوا، اس وجہ سے تاخیر ہوئی، فاضل بنچ نے کہا کہ اہم سوال ہے کہ آرڈیننس تین ماہ میں ختم جائے تو پھر کیا ہوگا، پھر پرانا قانون بحال ہوجائیگا کیا پھر آرڈیننس جاری ہوگا، آپ عدالتی حکم کی غلط تشریح کررہے ہیں کیوں نہ آپ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیں، فاضل بنچ نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کوکہا کہ وہ عدالت کی معاونت کریں، پنجاب حکومت قانون سازی نہ کرکے آئین کا مذاق اڑایا جارہاہے، ایڈووکیٹ جنرل پنجاب اور چیف سیکرٹری پنجاب کو بلا لیتے ہیں، یہ آرڈیننس کہاں پر ہے قانون سازی کا پراسس کیسے شروع ہوا؟ ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے کہا کہ سٹینڈنگ کمیٹی کے پاس پڑا ہے پراسس جاری ہے، فاضل بنچ نے کہا کہ عدالت قانون سازی کیلئے حکم جاری نہیں کرسکتی لیکن بتایا جائے یہ آرڈیننس کب تک قانون بن جائے گا؟سنا ہے اس آرڈیننس میں بھی ترمیم کی جارہی ہے پتہ نہیں یہ خبر درست ہے یا نہیں،فاضل بنچ نے مذکورہ بالاریمارکس کے ساتھ کیس کی مزید سماعت ملتوی کردی۔

لاہور ہائیکورٹ 

مزید :

صفحہ آخر -