منی لانڈرنگ کیس میں بینکنگ جرائم عدالت کا دائرہ اختیار نہیں بنتا، فاضل جج

 منی لانڈرنگ کیس میں بینکنگ جرائم عدالت کا دائرہ اختیار نہیں بنتا، فاضل جج

  

 لاہور(نامہ نگار)بینکنگ جرائم عدالت نے میاں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کا کیس دوسری عدالت میں منتقل کرنے سے متعلق تحریری حکم جاری کردیا بینکنگ جرائم عدالت کے جج سردار طاہر صابر نے 8 صفحات کا تحریری فیصلہ جاری کیا عدالتی فیصلے میں کہا گیاہے کہ بینک سپیشل کورٹس آرڈیننس کے تحت منی لانڈرنگ کیس میں بینکنگ جرائم عدالت کا دائرہ اختیار نہیں بنتا، دائرہ اختیار نہ ہونے کے باعث مقدمہ کا اصل چالان ایف آئی اے کو واپس کر دیا  سپیشل عدالت سنٹرل اور بنکنگ جرائم عدالتیں اپیل کی عدالتیں نہیں جو کیس کے میرٹ پر رائے دیں، سپیشل جج سنٹرل کی دائرہ اختیار پر اپنی رائے، بنکنگ جرائم عدالت اپنی خودمختار رائے دے گی، فریقین کے وکیل نے دائرہ اختیار کے نکتہ پر سپریم کورٹ اور ہائیکورٹ کے غیر متعلقہ حوالے پیش کئے۔بینکنگ جرائم کورٹ نے شہباز شریف اور حمزہ شہباز کے خلاف منی لانڈرنگ کے دائرہ اختیار کا ایف آئی اے کا اعتراض منظور کر تے ہوئے منی لانڈرنگ کا چالان ایف آئی اے کو واپس کر دیا،عدالت نے قراردیا کہ ایف آئی اے کو چالان متعلقہ عدالت میں جمع کرائے،ایف آئی اے چالان کا دائرہ اختیار بیکنگ جرائم کورٹ نہیں ہے،عدالت نے میاں شہباز شریف اور حمزہ کی مزید7یوم کے لیے حفاظتی ضمانت منظور کرتے ہوئے میاؓں شہباز شریف اور حمزہ کو متعلقہ عدالت میں درخواست ضمانت دائر کرنے کی ہدایت کردی،ایف آئی اے نے کیس سپیشل جج سینٹرل ایف آئی کورٹ منتقل کرنے کی درخواست دائر کررکھی تھی۔دوسری جانب  بینکنگ عدالت میں سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حمزہ شہباز نے کہا کہ ریاست مدینہ کا دعویدار آج اللہ کی پکڑ میں ہے، آج لوگ مہنگائی کے عذاب میں پس چکے،مہنگائی آسمان سے باتیں کر رہی ہے،عمران خان کہتا ہے کہ مہنگائی ہے تو حکومت کیا کرے،اس شخص کے بے حسی ہے، یہ شخص عوام کیلئے ہمدردی کے دو بول نہیں بول سکتا،پی ٹی آئی کا جنازہ بڑی دھوم دھام سے نکلے گا  آج چوری ڈاکے عام ہیں، راہ جاتے دن دہاڑے لوٹ لیا جاتا ہے کوئی پوچھنے والا نہیں،پیٹرول کی قیمت گزشتہ 74 برس کی نسبت سب سے زیادہ ہے،یہ شخص کہتا ہے کہ مہنگائی ہی نہیں،عمران نیازی بی گالہ کی پہاڑی سے نیچے اترو۔

عدالت

مزید :

صفحہ آخر -