جرائم کی سرکوبی کیلئے سی سی پی او کی سربراہی میں اعلی سطحی اجلاس

جرائم کی سرکوبی کیلئے سی سی پی او کی سربراہی میں اعلی سطحی اجلاس

  

پشاور(کرائمز رپورٹر)امسال جرائم پیشہ عناصر سے بہتر انداز میں نبٹنے کی خاطر جامع حکمت عملی ترتیب دی گئی ہے، محدود افرادی قوت کے باوجود سٹریٹ کرائمز پر قابو پانے میں کامیابی ملی، جرائم پیشہ عناصر کے خلاف کارروائیوں کو مزید موثر بنانے کی ضرورت ہے جس کے تحت اسنیپ چیکنگ، سرپرائز ناکہ بندیوں، سرچ اینڈ سٹرائیک آپریشنز کے سلسلہ کو مزید تیز کیا جائے، گلی محلے کی سطح پر ہیومن انٹیلی جنس کو مزید فعال کرنے کی ضرورت ہے تاکہ سماج دشمن عناصر سے متعلق بروقت مصدقہ انفارمیشن حاصل کرکے ان کے خلاف فوری ایکشن کو یقینی بنایا جا سکے، شہر میں قیام امن اور شہریوں کی جان و مال کے تحفظ کی خاطر دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ کوارڈینیشن کو مزید مربوط بنایا جائے، جرائم کی سرکوبی میں تفتیشی نظام کا کردار کلیدی ہے جس کو بھی مزید بہتربنایا جا رہا ہے، سٹریٹ کرائمز سے براہ راست تعلق رکھنے والے دیگر جرائم جیسے منشیات اور قمار بازی کو کنٹرول کرنے کی خاطر بھی لائحہ عمل ترتیب دے کر کارروائیوں کا آغا ز کر دیا گیا ہے، ان خیالات کا اظہار سی سی پی او عباس احسن نے گزشتہ روز ملک سعد شہید پولیس لائن پشاور میں اعلی سطحی میٹنگ کے دوران کیا  تفصیلات کے مطابق پشاور میں رواں سال جرائم پیشہ عناصر کے خلاف جامع اور مربوط حکمت عملی کی خاطر اعلی سطحی میٹنگ کا انعقاد کیا گیا ہے، سی سی پی او عباس احسن کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس میں ایس ایس پی آپریشن ہارون رشید، کمانڈنٹ کیمپس محمد حسین،ایس ایس پی انوسٹی گیشن شہزادہ کوکب فاروق،ڈی پی او ضلع خیبر سمیت چاروں ڈویژنل ایس پیز اور ٹریفک پولیس افسران نے بھی شرکت کی،اس موقع پر سی سی پی او عباس احسن نے جرائم برخلاف مال کے حوالے سے خصوصی ہدایات دیتے ہوئے واضح کیا کہ سٹریٹ کرائمز کی روک تھام اور سماج دشمن عناصر سے بہتر انداز میں نمٹنے کی خاطر خصوصی لائحہ عمل ترتیب دیا گیا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ جامع حکمت عملی کے تحت ابتدائی طور پر ٹربل پوائنٹس کی نشاندہی کر کے سنیپ چیکنگ اور ٹارگٹڈ کاروائیوں سے سٹریٹ کرائمز پر قابو پانے پر مدد ملی ہے جبکہ دوسرے مرحلے میں ماضی میں سٹریٹ کرائمز میں ملوث رہنے والے عناصر کا ڈیٹا از سر نو مرتب کرکے ان کی کڑی نگرانی شروع کر دی گئی ہے، سی سی پی او نے مزید کہا کہ امسال گلی محلے کی سطح پر ہیومن انٹیلی جنس کو فعال کرنے سمیت دیگر اداروں کے ساتھ بھی کوارڈینیشن کو مزید مربوط بنایا گیا ہے تاکہ مقامی سطح پر جرائم پیشہ عناصر کے خلاف بروقت انفارمیشن حاصل کرکے ان کے خلاف فوری ایکشن کو یقینی بنایا جا سکے، قبضہ گروپس، اسلحہ نمائش اور دیگر سماج دشمن سرگرمیوں میں ملوث عناصر کے خلاف نئے عزم کے ساتھ کریک ڈاون شروع کرنے سمیت شہر میں قیام امن کو یقینی بنانے کی خاطر پولیس کیجا نب سے جاری جرگہ مہم میں مقامی عمائدین اور جید علماء کرام کو بھی شامل کیا جا رہا ہے جس کے دور رس نتائج سامنے آئیں گے  کپیٹل سٹی پولیس آفیسر عباس احسن نے تمام افسران کو منشیات کے خلاف جاری جنگ کو مزید موثر بنانے سمیت آئس و دیگر منشیات کے خلاف آگہی مہم کو بھی مزید توسیع دینے کی ہدایت کی ہے نوجوان نسل کو منشیات کی تباہ کارویوں سے آگاہ کیا جا سکے 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -