سمال انڈسٹریز ڈویلپمنٹ بورڈ کا صنعتی بستیوں میں کریک ڈاؤن

سمال انڈسٹریز ڈویلپمنٹ بورڈ کا صنعتی بستیوں میں کریک ڈاؤن

  

        پشاور (سٹاف رپورٹر)سمال انڈسٹریز ڈویلپمنٹ بورڈ خیبرپختونخوا نے صوبے بھر کی صنعتی بستیوں میں کارخانوں کی عدم تعمیر اور صنعتی پلاٹوں کو پراپرٹی ڈیلروں کے حوالے کرنے والے لیز ہولڈرز کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے اس ضمن میں بورڈ کے مینجنگ ڈائریکٹر سید ظفر علی شاہ نے صوبے بھر کی صنعتی بستیوں کی انتظامیہ کو ایک مراسلہ جاری کیا ہے جس میں انہیں سختی سے ہدایت کی گئی ہے کہ ایسے صنعتی پلاٹس کے لیز منسوخ کرکے عام نیلامی کیلئے پیش کئے جائیں جو کافی طویل عرصے سے صنعتکاروں کے نام الاٹ ہو چکے ہیں مگر ان پر کارخانے نہیں بنائے گئے اور مختلف حیلوں بہانوں سے بورڈ انتظامیہ کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کی کوشش کی جاتی ہے مراسلے میں واضح کیا گیا ہے کہ صوبے کے مختلف اضلاع میں قائم سمال انڈسٹریل اسٹیٹس کے اندر انتہائی قیمتی پلاٹوں پر قواعد کے تحت معینہ مدت کے اندر لازماً صنعتی یونٹ قائم ہونا چاہئے تاکہ وہاں ایک طرف صنعتی پیداوار کی شکل میں معاشی سرگرمیوں اور روزگار کے مواقع میں اضافہ ہو تو دوسری طرف مختلف یوٹیلیٹیز کی مد میں انڈسٹریل اسٹیٹس کی آمدن بھی بڑھتی رہے اور اسکے ساتھ ہی ان صنعتی بستیوں کی نشوونما اور وہاں صنعتی ماحول اور نظم و ضبط کو بھی برقرار رکھا جا سکے مراسلے میں کہا گیا ہے کہ صنعتی اور معاشی رفتار میں تیزی کے سلسلے میں صوبائی حکومت کے ویژن اور سنجیدہ اقدامات سے سبھی لوگ آگاہ ہیں اس بارے میں گاہے بگاہے تاکیدی ہدایات بھی جاری کی جاتی ہیں مراسلے میں ایبٹ آباد، درگئی اور چارسدہ سمیت صوبے بھر میں قائم سمال انڈسٹریز کی انتظامیہ اور حکام کو واضح طور پر ہدایت کی گئی ہے کہ عرصہ دراز سے جن لیز ہولڈرز کو صنعتی پلاٹس الاٹ کئے گئے اور انہوں نے وہاں کارخانے قائم کرنے کی بجائے دوسرے سرمایہ کاروں پر ان پلاٹس کے لیز بیچنے اور پراپرٹی ڈیلنگ کرنے کا غیرقانونی کاروبار شروع کیا وہ لیز فوری طور پر منسوخ کرکے انہیں میرٹ پر دوسرے خواہشمند سرمایہ کاروں کو کھلی نیلامی کیلئے مشتہر کیا جائے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ چارسدہ، درگئی اور ایبٹ آباد انڈسٹریل اسٹیٹس کے مجاز حکام نے ان چھوٹی صنعتی بستیوں میں ایسے کئی پلاٹس کی نشاندھی کی ہے جو شروع دن سے خالی پڑے ہیں اور نہ صرف ان پر کارخانے تعمیر نہیں ہوئے بلکہ انہیں مبینہ طور پر پراپرٹی ڈیلرز کے حوالے کرنے اور غیر قانونی خرید و فروخت کی رپورٹس بھی ملی ہیں لہذا سمال انڈسٹریز ڈویلپمنٹ بورڈ نے ایسے تمام غیر استعمال شدہ صنعتی پلاٹس کی قانون کے مطابق سکروٹنی اور خلاف ورزی کی صورت میں لیز منسوخ کرکے انہیں جلد از جلد عام نیلامی کیلئے پیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے درایں اثناء سمال انڈسٹریز ڈویلپمنٹ بورڈ انتظامیہ کی جانب سے خالی صنعتی پلاٹ والے لیز ہولڈرز کو بھی متنبہ کیا گیا ہے کہ وہ لیز منسوخی سے بچنے کیلئے اپنے پلاٹس پر دو ہفتوں کے اندر کارخانوں کی تعمیرات یقینی بنائیں اور کارخانوں کے سائٹ پلان بورڈ کے متعلقہ مجاز حکام کے پاس جمع کرائیں تاکہ انکے خلاف محکمانہ کارروائی روکی جا سکے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -