سندھ میں گھر گھر ویکسین کے لیے اہم اقدامات اٹھانے کا فیصلہ

سندھ میں گھر گھر ویکسین کے لیے اہم اقدامات اٹھانے کا فیصلہ

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)وزیر صحت و بہبود آبادی سندھ ڈاکٹر عذرا پیچوہو کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں کرونا ویکسینیشن کی تعداد بڑھانے، سندھ میں کرونا ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کروانے اور گھر گھر ویکسین کے لیے اہم اقدامات اٹھانے کا فیصلہ۔ اس ضمن میں ہونے والے اجلاس میں پارلیمانی سیکریٹری قاسم سومرو، سیکریٹری صحت سندھ ذوالفقار شاہ، ایڈیشنل ڈائریکٹر ای پی آئی ڈاکٹر ارشاد میمن، سندھ بھر کے ڈپٹی کمیشنرز اور ڈی ایچ اوز نے بذریعہ وڈیو لنک شرکت کی۔ اجلاس میں کرونا ویکسینیشن صورتحال اور اسے مزید تیز کرنے کے حوالے سے جائزہ لیا گیا۔ اس موقع پر صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے کہا کرونا کے کیسز میں اضافہ کو نظر میں رکھتے ہوئے ویکسین اقدامات کو مزید مو ثر بنانے کی ضرورت ہے۔ ہمیں ویکسینیشن کے معاملے پر اب دوبارہ سختی کرنی ہوگی۔ لوگ کرونا ایس او پیز کو مکمل نظر انداز کر رہے ہیں، جس کی وجہ سے مثبت کیسز میں اضافہ ہو رہا ہے۔ صوبائی وزیر صحت سندھ نے کہا کہ تمام شہریوں کے ماسک پہننے پر سختی سے عمل کروایا جا?، تا کہ وائرس کے پہلاو  کو روکا جا سکے۔ انہوں نے ہدایات دیں کہ کرونا ایس او پیز پر عمل کروانے کے لیے محکمہ داخلہ سندھ کو آن بورڈ لیا جا? گا انہوں نے مزید ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ شاپنگ مالز، شادی ہالز والوں کے لیے لازمی ہوگا کہ وہ ویکسینیشن کارڈ کے بغیر لوگوں کو داخلہ ہونے سے منع کردیں۔ وزیر صحت نے کہا کہ ایس او پیز پر عمل نہ کرنے والے شاپنگ مالز اور شادی ہالز کے خلاف کارروائی کی جائے گی، سخت اقدامات کے بعد ہی زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ویکسین کروانے پر آمادہ کیا جا سکتا ہے، انہوں نے کہا کہ سڑکوں پر اہلکاروں کے لیے ماسک پہننا لازمی قرار دیا جائے، اس ضمن میں آئی جی سندھ کو خط لکھا جائے۔ ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے کہا کہ اگر ویکسین نہیں کریں گے تو کرونا کیسز کے عداد لاکھوں میں آئیں گے، ویکسین ڈیٹا کا جائزہ لیں جن علاقوں میں ویکسینیشن کے عداد کم ہیں ان علاقوں میں ویکسین ڈرائیو شروع کی جائے جبکہ گھر گھر ویکسین کا پلان بنائیں، خاص طور گھریلو خواتین کی ویکیسن کے لیے مائکرو پلان بنایا جائے۔ صوبائی وزیر صحت نے ہدایات دیں کہ ضلعی انتظامیہ سوشل موبلائیزیشن میں اپنا کردار ادا کریں، علاقوں کے معززین کا اجلاس بلائیں اس ضمن میں مساجد کا بھی سہارا لیا جائے اس ضمن میں علاقوں کے ماحول اور روایات کے مطابق سوشل موبلائیزیشن پلان بنایا جائے۔ کرونا ٹیسٹ کی تعداد بڑھانے کے سلسلے میں صوبائی وزیر صحت نے ہدایات دیں کہ پی سی آر ٹیسٹ میں اضافہ کیا جا?، خاص طور پر مارکیٹ اور گنجان ایریاز میں رینڈم سیمپلز لیے جائیں جبکہ رینڈم سیمپلز کی جینومک بھی کرائی جائے گی، تا کہ کمیونٹی میں ویرینٹ کا بھی پتہ لگایا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ کرونا ویکسین کے دوسرے ڈوز کے لیے فون کالز اور میسجز کا سلسلہ شروع کیا جائے۔

مزید :

صفحہ آخر -