روس نے سویڈن اور فن لینڈ کی سلامتی پالیسی کو یورپ کے لیے مثبت قرار دے دیا

روس نے سویڈن اور فن لینڈ کی سلامتی پالیسی کو یورپ کے لیے مثبت قرار دے دیا
روس نے سویڈن اور فن لینڈ کی سلامتی پالیسی کو یورپ کے لیے مثبت قرار دے دیا
سورس: Instagram/s.v.lavrov

  

سٹاک ہوم (حافظ محمد عمران) روس کے وزیر خارجہ سرگئی لاوروف نے  یوکرین کے تنازعے پر روس اور مغربی طاقتوں کے درمیان ایک ہفتے تک جاری رہنے والی بات چیت کے بعد سویڈن اور فن لینڈ کی سلامتی پالیسی کو یورپ کے لیے مثبت قرار دے دیا ہے۔ 

سرگئی لاوروف نے ماسکو میں  پریس کانفرنس کرتے ہوئے ں کہا ہے کہ  ہم سویڈن اورفن لینڈ کی یوکرین کے معاملے پر غیر جانبدارانہ خارج پالیسی کو یورپی سیکورٹی اوراستحکام میں ایک اہم کردار کے طور پر دیکھتے ہیں۔ لاوروف نے کہا کہ ان کا ماننا ہے کہ یورپ کی سلامتی میں غیرجانبدارریاستوں کی شراکت داری میں اب بھی کمی واقع نہیں ہوئی، ان کا مزید کہنا تھا کہ نیٹو کی رکنیت کے معاملے پر فیصلہ سویڈن اور فن لینڈ کو خود کرنا ہے، تاہم ساتھ ہی ساتھ  روسی وزیر خارجہ نے  یہ بھی تجویز کیا کہ سویڈن اور فن لینڈ نیٹو کے دفاعی اتحاد میں شامل نہ ہوں تو بہتر ہے۔

سویڈن دفاعی اورسلامتی کی پالیسی کے حوالے سے کئی دوسرے ممالک کے ساتھ  نیٹو فوجی اتحاد کے ساتھ بھی تعاون کرتا ہے، جبکہ سویڈن کا حالیہ برسوں میں نیٹو کے ساتھ تعاون مزید گہرا اور مضبوط ہوا ہے، لیکن اب بھی سویڈن نیٹو اتحاد کا رکن نہیں ہے اور اس طرح سویڈن نیٹو کے ساتھ باہمی دفاعی ضمانتوں کا احاطہ نہیں کرتا۔

مزید :

بین الاقوامی -