چین ایسا خوفناک ہتھیار بنانے کی تیاری میں کہ صرف خبروں نے ہی مغرب کی نیندیں اڑا دیں

چین ایسا خوفناک ہتھیار بنانے کی تیاری میں کہ صرف خبروں نے ہی مغرب کی نیندیں ...
چین ایسا خوفناک ہتھیار بنانے کی تیاری میں کہ صرف خبروں نے ہی مغرب کی نیندیں اڑا دیں

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) بہت کم عرصے میں دنیا کی بڑی طاقت بننے والے ملک چین نے دنیا کا جدید ترین سٹیلتھ سپر بمبار طیارہ بنانے کا اعلان کر دیا ہے جو دنیا کے سب سے بڑے سمندر بحرالکاہل میں دور تک مارکرنے کی صلاحیتوں سے مالامال ہو گا جس سے بحرالکاہل میں موجود امریکی فوجی اڈے چین کی فضائیہ کی زد میں آ جائیں گے۔
چینی اخبار ”دی ڈپلومیٹ“ کی رپورٹ کے مطابق چینی فوجی قیادت کے ایک اجلاس میں پیپلز لبریشن آرمی ایئر فورس (پی ایل اے اے ایف) کو ایک تزویراتی فورس قرار دیا گیا ہے جبکہ اس سے قبل یہ نام پیپلز لبریشن آرمی (پی ایل اے) کی سیکنڈ آرٹلری کور کو دیا جاتا ہے جو بیجنگ کی ڈی فیکٹو سٹریٹجک میزائل فورس ہے۔ اجلاس میں کہا گیا ہے کہ یہ بمبارطیارہ ایسا ہونا چاہیے جو جزائر کوریلز سے شروع ہو کر شمال میں جاپان سے لے کر جزائر بونینز، جزائر میرینینز، جزائر کیرولینز اور جنوب میں انڈونیشیا تک مار کرنے کی صلاحیت رکھتا ہو۔پی ایل اے نے جس طرح کا بمبار بنانے کے عزم کا اظہار کیا ہے اس کی ماردوبارہ ایندھن بھروائے بغیر کم از کم 8000کلومیٹر ہو گی جبکہ اس پر فضا سے زمین پر نشانہ لگانے والے دس ٹن سے زیادہ ہتھیار لادے جا سکیں گے۔

چین کی نئے بمبار کی علامتیں اس سب سونک سٹیلتھ بمبار ایچ 20سے میل کھاتی ہیں جس کے بارے میں دستیاب ہونے والی معلومات سے انداز لگایا گیا ہے کہ یہ 2025ءتک سروس میں آ جائے گا۔ چائنیز ملٹری ایوی ایشن کے مطابق طویل فاصلے تک مار کرنے والے بمبار کے ڈیزائن کا کام ایئر کرافٹ ڈیزائن انسٹیٹیوٹ میں 1990ءکی دہائی سے جاری ہے۔ نئے بمبار طیارے میں ممکنہ طور پر امریکی بی 2کی طرح فلائنگ ونگ ڈیزائن شامل ہو گا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -