اسلام کی تعلیمات پر عمل کرنے میں ہی انسانیت کی فلاح ہے،زوار بہادر

اسلام کی تعلیمات پر عمل کرنے میں ہی انسانیت کی فلاح ہے،زوار بہادر

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(نمائندہ خصوصی)جمعیت علماء پاکستان کے رہنماء علامہ قاری محمد زوار بہادر نے کہا ہے کہ قرآن پاک رسول اللہ ﷺکا عظیم معجزہ ہے14 سو سال سے زائد گزرنے کے باوجود قرآن پاک کی کوئی زیر زبر بھی تبدیل نہیں کرسکااس کی حفاظت کا ذمہ خود اللہ پاک نے اپنے ذمہ لیا ہے اور رسول اللہ ﷺ کی اُمت کے حفاظ کرام کے سینوں میں یہ محفوظ ہے اُمت مسلمہ جب تک قرآن پاک کے احکامات اور سنّت رسول ﷺ پر عمل کرتے رہیں گے تو کامیاب رہیں گے آج ہم قرآن پاک کی تعلیمات سے کوسوں دور جاچکے ہیں اسی لئے پوری دنیا پر مسلمانوں کو ذلت ورسوائی کا سامنا ہے انہوں نے کہاکہ اسلام کی تعلیمات ،سچائی، انصاف اور عدل پر مبنی ہیں اس لیے اس کی تعلیمات اغیار کے دلوں میں بھی جگہ بنالیتی ہیں آج پوری دنیا کے دانشور یہ تسلیم کرچکے ہیں کہ اسلام کی تعلیمات پر عمل کرنے میں ہی انسانیت کی فلاح ہے۔انہوں نے کہا کہ اسلام اپنی حقانیت کی بنیاد پر آج پوری دنیا میں تیزی سے پھیل رہا ہے امریکہ اور یورپ میں لوگ تیزی سے اسلام قبول کررہے ہیں مسلمانوں کو چاہیے کہ وہ بھی اپنی زندگیوں کو اسلام اور رسول اللہؓ ﷺ کی شریعت کے مطابق گزارنے کا پابند بنائیں ۔



گر آج اُمت مسلمہ سچے دل سے رسول اللہ ﷺ کی تعلیمات کی پابند ہو جائے تو آج بھی مسلمانوں کو عظمت رفتہ حاصل ہو سکتی ہے انہوں نے کہا کہ دشمنان اسلام اپنی پوری طاقت کے ساتھ اسلام کو مٹانے کے درپے ہیں مگر وہ اسلام کے چراغ کو بجھانے میں کبھی کامیاب نہیں ہوسکتے۔ اللہ تعالی کا وعدہ ہے کہ اسلام کا بول بالا ہوگا اور کفر نیست ونابود ہوگا مگر ہمیں بھی اس کے لیے اپنے اعمال کو درست کرنا ہوگا اور ہماری نجات صرف رسول اللہﷺ کے عطاء فرمائے ہوئے دستور حیات میں ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے شب قدر پر جا معہ محمدیہ رضویہ گلبرگ میں ختم قرآن کے موقع پر عظم الشان اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ قاری عبدالر حمن نورانی،رشید احمد رضوی ،مولانا سرفرار احمد قادری ،حافظ سبحان طیب ،قاری اعجاز نورانی ،قاری محمد رفیق اور دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا ۔ہزارو ں افراد کے روحانی اجتماع کے اختتام پررقت آمیز دعا بھی کی گئی حاضرین نے اللہ تعالیٰ سے اپنے گناہوں کی مغفرت ، وطن عزیزپاکستان کے استحکام،عالم اسلام اور برما کے مظلوم مسلمانوں کے لئے بھی دعائیں کی گئیں۔