اسرائیل میں ایرانی سفارت خانہ قائم، سفیر کی تلاش جاری

اسرائیل میں ایرانی سفارت خانہ قائم، سفیر کی تلاش جاری

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

دبئی (آئی این پی )ایران اوراسرائیل کے عوامی حلقوں کی جانب سے دوطرفہ سفارتی تعلقات کے قیام کے لیے آوازیں اٹھنا شروع ہوگئی ۔ اس کی تازہ مثال حال ہی میں اسرائیل میں سامنے آئی جہاں مختلف فن کاروں، سماجی کارکنوں اور سول سوسائٹی کے افراد نے "اسلامی جمہوریہ ایران" کا پرچم لہراتے ہوئے ایک علامتی سفارت خانہ قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ایران اور اسرائیل کیدرمیان خفیہ مراسم پرانے ہیں۔ اگرچہ دونوں ملکوں کی قیادت ان سے انکاری ہے۔ تاہم مصدقہ اطلاعات کے مطابق 1980ء تا 1988ء کی عراق۔ ایران جنگ کے دوران تل ابیب نے تہران کو پیٹریاٹ طرز کے "ایران کونٹرا" ایران جیٹ نامی میزائل فراہم کیے تھے۔آج ایک بار پھر دونوں ملکوں کے درمیان عوامی سطح پر رابطے بڑھانے کی ایک نئی مہم دیکھی جا رہی ہے۔ چونکہ دونوں ملکوں کے درمیان 1979ء کے بعد سے سفارتی تعلقات منطقع ہیں، اس لیے اب اسرائیل کے عوامی حلقوں میں ایران کے حوالے سے "ہاتھ ہولا" رکھنے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔اسرائیل کے ایک موقراخبار "ہارٹز" کے انگریزی ایڈیشن نے ایک تصویر شائع کی ہے۔ اس تصویر میں سول سوسائٹی کے کچھ لوگوں، فن کاروں اور سماجی کارکنوں کو دکھایا گیا ہے۔ انہوں نے مل کر ایران کا قومی پرچم تھام رکھا ہے۔

مزید :

عالمی منظر -