وزیراعظم کسی صورت بھی مستعفی نہیں ہوں گے،عمران خان پاکستان میں فتح اللہ گولن کا ماڈل لانا چاہتے ہیں:احسن اقبال

وزیراعظم کسی صورت بھی مستعفی نہیں ہوں گے،عمران خان پاکستان میں فتح اللہ گولن ...
وزیراعظم کسی صورت بھی مستعفی نہیں ہوں گے،عمران خان پاکستان میں فتح اللہ گولن کا ماڈل لانا چاہتے ہیں:احسن اقبال

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ (ن) کے سینیئر رہنما اوروفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی احسن اقبال نے کہا ہے کہ عمران خان نے ماضی میں بھی دھرنے میں مختلف اداروں کے عناصر کو استعمال کیا اور اس وقت بھی وہ ترکی کے فتح اللہ گولن کی طرح سے ملک میں سیاسی کنٹرول حاصل کرنا چاہتے ہیں،وزیر اعظم استعفیٰ دے کر سیاسی خود کشی کرنے کی بجائے بھرپور انداز میں اس ’’سیاسی جنگ ‘‘ کو  عدالتوں میں لڑنے کیلئے تیار ہیں۔

نجی ٹی وی کو دیئے گئے انٹرویو میں احسن اقبال نےعمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ (ن) لیگ صرف اپنے ووٹرز کو جوابدہ ہے اور ہم ہر سازش کا کھل کر مقابلہ کریں گے،عمران خان نے ماضی میں بھی دھرنے میں مختلف اداروں کے عناصر کو استعمال کیا اور اس وقت بھی وہ ترکی کے فتح اللہ گولن کی طرح ملک میں سیاسی کنٹرول حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ عمران خان مسلسل کوشش کر رہے ہیں کہ وہ اپنے سیاسی حمایتوں کے ذریعے سے اقتدار حاصل کریں اور جس طرح کا بیان پاناما کیس کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم(جے آئی ٹی) کی رپورٹ آنے سے پہلے انھوں نے دیا تھا وہ بھی بظاہر عدالت کو ایک دھمکی تھی۔اس سوال پر کہ کیا آپ سمجھتے ہیں کہ عمران خان کے حمایتی فوج میں بھی ہیں جن کے ذریعے وہ حکومت کرنے کی خواہش رکھتے ہیں؟ تو احسن اقبال نے کہا کہ 'مجھے نہیں معلوم کہ ایسا ہے یا نہیں لیکن یہ ضرور کہہ سکتا ہوں کہ وہ وہی ماڈل پاکستان میں لانا چاہتے ہیں جو کہ فتح اللہ گولن کا ہے۔ان کا یہ بھی کہنا تھا ہم چاہتے تو عمران خان کو 2013 میں ہی نااہل کروا سکتے تھے، لیکن ہم نے ایسا نہیں کیا مگر جب سے ہماری حکومت آئی عمران خان ملکی ترقی کے راستے میں آکر کھڑے ہوگئے ہیں۔احسن اقبال نے کہا کہ تحریک انصاف اور دیگر اپوزیشن جماعتیں 2014 سے ہی وزیراعظم سے استعفی مانگ رہی ہیں اور اگر نواز شریف نے استعفی دے دیا تو یہ ان کیلئے سیاسی خودکشی ہوگی۔انھوں نے کہا کہ ہمیں شروع دن سے پاناما کیس کی جے آئی ٹی پر تحفظات تھے اور اب جب ایک سازش کے ذریعے ہماری حکومت کو گرانے کی کوشش کی جارہی ہے تو ہم اس سیاسی جنگ کو بھرپور انداز میں عدالتوں میں لڑنے کیلئے تیار ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ لیگی وکلا عدالت میں یہ ثابت کریں گے کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ مکمل طور پر بدنیتی پر مبنی ہے جس کی آئینی اور قانونی لحاظ سے کوئی حیثیت نہیں ہے۔وفاقی وزیر احسن اقبال  کا کہنا تھا کہ ایف زیڈ ای کمپنی حقیقت میں وزیر اعظم کے بیٹے کی کمپنی ہے اور نواز شریف اس کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں سے تھے، لیکن شیئر ہولڈر نہیں۔

مزید : قومی


loading...