موسلادھار بارش ، نشیبی علاقے ندی نالوں میں تبدیل ، شہری سڑکوں پر خوار

موسلادھار بارش ، نشیبی علاقے ندی نالوں میں تبدیل ، شہری سڑکوں پر خوار

  



لاہور(جنرل رپورٹر۔ایجوکیشن رپورٹر،تصاویر ندیم احمد) صوبائی دارالحکومت میں موسلادھاربارش سے شہر کے گلی کوچے ’ڈوب گئے ۔ سڑکیں اور گلیاں پانی سے بھرگئیں، اہم شاہراؤں پربھی پانی جمع،شہری گاڑیوں اورموٹرسائیکلوں کودھکے لگاتے رہے۔بارش کے باعث شہر میں ہر سڑک پر ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا ۔ تیز بارش سے سڑکوں پر گاڑیوں کی لمبی قطا ر یں لگی رہیں جس کے باعث شہری اپنی فیملیوں کے ساتھ گاڑیوں میں قید رہے ۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز شہر میں ہونے والی بارش کے بعد ہر طرف جھل تھل ہو گیا ، جیل روڈ،مال روڈ،لارنس روڈ،گڑھی شاہو ،قرطبہ چوک ،عابد مارکیٹ ،جین مندر ایک اور دو موریہ پل ،،بادامی باغ ،ٹھوکر نیاز بیگ سے ملحقہ سڑکوں اور گلیوں میں پانی جمع ہو گیا ۔بارش کے ساتھ ہی ایم ڈی واسا زاہد عزیز وائس چیئر مین چودھری شہباز ،ڈپٹی کمشنر سمیر احمد سید دیگر حکام کے ساتھ سڑکوں پر نکل آئے اور انہوں نے نکاسی آب کی نگرانی کی مگر ایسے علاقے جن میں کروڑوں روپے کی لاگت سے سیوریج کی نئی پائپ لائنیں ڈالی گئی ہیں وہاں بھی گھنٹوں پانی جمع رہا جس کی وجہ سے زندگی درہم برہم رہی ۔اس ضمن مین ایم ڈی واسا زاہد عزیز کا کہنا تھا کہ بارش مسلسل ہوتی رہی جس سے ہر طرف پانی ہی پانی نظر آیا لیکن واسا کے عملے کے الرٹ ہونے کی وجہ سے پانی مقررہ وقت پر نکل گیا ۔ایسے نشیبی علاقے جہاں پانی نکلنے کی رفتار سسٹم کے باعث سست تھی وہاں موبائل پمپوں کی مدد سے پانی کا فوری اخراج کر دیا گیا ۔یہ کہنا کہ عملہ الرٹ نہیں تھا ایسا نہیں ہے میں اور میرا عملہ ہمہ وقت نکاسی آب کے لئے الرٹ ہیں اور مون سون کی بارشوں سے نمٹنے کے لئے واسا میں ایمر جنسی بھی نافذ ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...